مردان میں درجہ چہارم ملازمین کی ہڑتال جاری

مردان میں درجہ چہارم ملازمین کی ہڑتال جاری

مردان(بیورو رپورٹ)درجہ چہارم اور درجہ سوم کے ملازمین کے احتجاج کے تیسرے روز بھی مردان کے تمام چھوٹے بڑے ہسپتالوں سمیت ڈی ایچ کیو اور مردان میڈیکل کمپلیکس ،باچا خان میڈیکل کالج میں مکمل ہڑتال رہی اور بدستور احتجاجی جلوس نکال کرمظاہرین نے ہاتھوں پر کالی پٹیاں باندھی تھی اور صوبائی حکومت کے خلاف نعرے لگارہے تھے اور ہاتھوں میں فلکس اور چارٹس بھی اُٹھا رکھے تھے۔ملازمین نے مردان پریس کلب کے سامنے دھرنا دیا اور جلسہ کیا جس سے خطاب کرتے ہوئے ڈویژنل صدر عالمزیب نے کہا کہ صوبائی حکومت جلد از جلد اپنا وعدہ پوراکیا جائے کیونکہ آٹھ مہینے گزرنے کے باوجود ابھی تک صوبائی وزیر خزانہ مظفر سید نے اپنے وعدے پر پاؤں رکھ دی ہے اور ہمیں اپنے حق سے محروم رکھا ہے۔احتجاجی ملازمین نے پریس کلب کے سامنے کئی گھنٹوں تک روڈ کو بند رکھا اور دھرنا دیاجس سے عام لوگوں کو گزرنے میں کافی دشواری رہی۔احتجاجی جلسے سیڈویژنل صدر اور ال پاکستان پیرامیڈیکل سٹاف فیڈریشن کے مرکزی صدر شرافت اللہ یوسفزئی، صدر نصیر احمد ،سکندر باچا، سرتاج مایار،اجمل خان، فضل قیوم نے بھی خطاب کیا۔مقریرین نے صوبائی حکومت سے پر زور مطالبہ کیا کہ اگر انکے مطالبات جلد حل نہ کئے گئے تو مجبوراً پشاور میں دھرنے دئیے جائنگے جبکہ بنی گالہ میں بھی دھرنے سے دریغ نہیں کیا جائے گاجس کی تمام تر ذمہ داری موجودہ حکومت پر عائد ہوگی۔

 

مزید : کراچی صفحہ اول