باجوڑ ،ہسپتال کے کلریکل سٹاف اور کلاس فور ملازمین کی ہڑتال جاری

باجوڑ ،ہسپتال کے کلریکل سٹاف اور کلاس فور ملازمین کی ہڑتال جاری

باجوڑ ایجنسی (نمائندہ پاکستان )باجوڑ ہسپتال کے کلریکل اور کلاس فور ملازمین کا پروفیشنل ہیلتھ الاؤنس نہ ملنے کے خلاف تین روزہ احتجاج جاری۔کلاس وون کو ایک لاکھ روپے الاؤنس دیا جاتا ہے لیکن کے پی کے حکومت کے پاس ہمیں 20ہزار الاؤنس دینے کیلئے خزانہ خالی ہے ۔مقررینہیڈ کوارٹر ہسپتال خار میں کلاس فور اور کلریکل ملازمین کا ہیلتھ الاؤنس نہ ملنے کے خلاف تین روزہ احتجاجی مظاہرہ جاری ہے جس میں ایجنسی بھر سے محکمہ صحت کے کلریکل اور کلاس فور ملازمین کثیر تعداد میں احتجاج پر بیٹھے ہیں اور مظاہرین بار بار مطالبہ کر رہے ہیں کہ ہم ڈاکٹروں سے ذیادہ ڈیوٹیاں دے رہے ہیں لیکن آج تک ہمیں معاوضے سے محروم رکھے جا رہے ہیں احتجاج کے دوسرے روز پیرامیڈیکس کا ایم ایس کیساتھ تلخ کلامی ہوئی جس پر احتجاج میں اور بھی شدت آگئی ہے ذرائع کے مطابق ایم ایس سٹاف کو ڈیوٹی پر آنے کیلئے دباؤ ڈال رہا ہے لیکن سٹاف ڈیوٹی کرنے سے مسلسل انکار کرکے احتجاج پر بیٹھے ہیں مقررین خیبر پختونخوا حکومت کو تنقید کا نشانہ بناکر مطالبہ کر رہے ہیں کہ خیبر پختون حکومت نے کلاس وون ملازمین کو ایک لاکھ روپے ہیلتھ الاؤنس جاری کیا ہے اور جب ہمارا وفد سیکرٹری ہیلتھ یا خیبر پختونخواہ کے دوسرے اعلی حکام سے ملتے ہیں تو خزانہ خا لی ہے کا بہانہ بناتے ہوئے ہمارے اس جائز مطالبے کو مسلسل پس پُشت ڈال رہے ہیں جو ہمارے غریب ملازمین کیساتھ ظلم و ذیادتی ہے حالانکہ ہم اپنے ہسپتالوں میں ان ڈاکٹروں سے ذیادہ کام اور ڈیوٹیاں انجام دے رہے ہیں احتجای مظاہرے میں نیشنل پارٹی کے رہنماء گل افضل ،مسلم لیگ ن کے نظام الدین خان اور پیپلز پارٹی کے اورنگ زیب انقلابی سمیت دیگر سیاسی رہنماؤں نے بھی احتجاجی مظاہرین سے خطاب کیا اور مظاہرین کیساتھ ہر قسم تعاون کا اعلان کیا ملازمین نے کہا کہ ایجنسی میں تین روز تک احتجاج کیا جائے گا اور مطالبات تسلیم نہ ہونے کی صورت میں وزیر اعلی ہاؤس کے سامنے بھوک ہڑتال پر بیٹھ جائے گے۔

مزید : کراچی صفحہ اول