لوکل گورنمنٹ ایکٹ2013ء کے بائی لائز میں ترمیم کیلئے قرار داد لانے کا فیصلہ

لوکل گورنمنٹ ایکٹ2013ء کے بائی لائز میں ترمیم کیلئے قرار داد لانے کا فیصلہ

پشاور( کرائمز رپورٹر )پشاور‘ ضلع ناظم پشاور محمدعاصم خان نے ضلع پشاورمیں کمرشل نقشے پاس کرنے میں زمین کی کمرشل لائزیشن فرد لازمی ہو نے کی بناء پر ضلع کونسل کے آئندہ اجلاس میں لوکل گورنمنٹ ایکٹ 2013 ء کے بائی لائز میں ترمیم کرنے کیلئے قرارداد لانے کا فیصلہ کیا ہے ضلع ناظم کی زیر صدارت بی سی اے ٹاؤن فورکا اجلاس منعقدہواجس میں ناظم ٹاؤن فور ہارون صفت ‘ چیئر مین بی سی اے کمیٹی ارباب یوسف حیات ‘ آفتاب آفریدی وائس چیئرمین ‘ ڈسٹرکٹ ممبر آصف خان ممبر ‘ ایکسین داؤد جان ‘ ایس ڈی او نواز خان اور دیگر افرادنے شرکت کی۔ اجلاس میں کمرشل 6 نقشے زیر بحث لائے گئے جس میں متعلقہ پٹواری نے تین نقشوں کی اراضی کی کمرشل لائزیشن فرد اور انتقال ایشو نہ کرنے کی وجہ سے نقشے پاس نہ ہوسکیں اجلاس کو بتایا گیا کہ نقشے جمع کرنے والے مالکان پراپرٹی ٹیکس ‘ ایف بی آر ٹیکس اور متعلقہ ٹی ایم اے کو نقشہ فیس جمع کرنے کے باوجود فرد یا کمرشل انتقال ایشونہیں کیاجارہاہے جس کی وجہ سے مالکان کو نقشے پاس کرنے میں دشواری کا سامناکرناپڑتاہے جبکہ ایک نقشہ پاس کرنے میں 6 مہینے سے ایک سال تک ضائع ہورہا ہے ‘ ٹی ایم اے سٹاف نے ضلع ناظم کو بتایاکہ ایف بی آر ٹیکس نقشہ فیس سے کئی گنا زیادہ سے جسکی وجہ سے شہری کمرشل اور رہائشی نقشے پاس کرنے سے کتراتے ہیں انہوں نے کہاکہ جس ٹی ایم اے کا نقشہ فیس دو ہزار روپے ہے تو اسی جگہ ایف بی آر کا ٹیکس بیس ہزار بنتی ہے جس میں نقشہ پاس کرنے والے ٹال مٹول کررہاہے اور ایف بی آر از خود اپنے ٹیکس کلیکشن کیلئے اقدامات کریں اور ایف بی آر اس مسئلے کا حل نکالیں ‘ بی سی اے اہلکاروں نے وضاحت کی کہ چاروں ٹاؤئز میں بلڈنگ کنٹرول انسپکٹر ‘ اسسٹنٹ بلڈنگ کنٹرول انسپکٹر کی سٹاف کی کمی ہے اور صرف ٹاؤن فور کے 21 یونین کونسلوں کیلئے دو اے بی آئی ہے جبکہ بلڈنگ انسپکٹر سب انجینئر اوردیگر سٹاف نہ ہونے کے برابر ہے جسکی تقرری کی اشد ضرور ت ہے ضلع ناظم نے نوٹس لیتے ہوئے ہدایت کی ہے چاروں ٹاؤنز میں بلڈنگ انسپکٹر اور اسسٹنٹ بلڈنگ انسپکٹروں کی کمی دورکرکے فوری طور پر خالی آسامیوں پر این ٹی ایس کے ذریعے بھرتی کی جائے ضلع ناظم نے کہاکہ جب ایک علاقہ یا کسی شخص کی ملکیتی جائیداد گراؤنڈ ر ایئلٹی کو مدنظر رکھ کر پٹواری سے فرد یا کمرشل انتقال ایشو کرنے کیلئے بائی لائز میں ترمیم کرینگے اور آئندہ اجلاس میں اس حوالے سے قرار داد لائی جائیگی جس کو منظور کرنے کے بعد ڈپٹی کمشنر کو ارسال کرکے پٹوراری کے ذریعے نافذ کریں گے تاکہ شہریوں کے کمرشل نقشے پاس کرنے کے دشواریوں دور ہوسکیں انہوں نے کہاکہ نقشوں میں تاخیری حربے برداشت نہیں کی جائیگی اور کاغذی کارروائی مکمل کرنے والوں کو نقشے بروقت جاری کرینگے انہوں نے کہاکہ بائی لائز میں کہیں بھی نہ لکھاگیا ہے کہ کمرشل نقشے کیلئے کمرشل انتقال ضروری ہے لیکن قانونی پیحیدگیوں کی وجہ سے کمرشل نقشے پاس کرنے کیلئے رولز میں ترامیم کرینگے ۔

مزید : پشاورصفحہ آخر