سکالر شپ پر امریکی یونیورسٹی میں پڑھنے والے پاکستانی طالبعلم کے امریکہ داخلے پر پابندی لگادی گئی، لیکن کیوں؟ جان کر ہر پاکستانی بے حد پریشان ہوجائے گا

سکالر شپ پر امریکی یونیورسٹی میں پڑھنے والے پاکستانی طالبعلم کے امریکہ ...
سکالر شپ پر امریکی یونیورسٹی میں پڑھنے والے پاکستانی طالبعلم کے امریکہ داخلے پر پابندی لگادی گئی، لیکن کیوں؟ جان کر ہر پاکستانی بے حد پریشان ہوجائے گا

  

نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک)سکالرشپ پر امریکہ کی شکاگو یونیورسٹی میں زیرتعلیم ایک پاکستانی طالب علم کو ایسی بناءپر امریکہ میں داخل ہونے سے روک دیا گیا ہے کہ جان کر ہر پاکستانی پریشان ہو جائے گا۔ اخبار ’ایکسپریس ٹربیون‘ کی رپورٹ کے مطابق 25سالہ ضیاءحسین شاہ کراچی کا رہائشی ہے جو چھٹیوں پر پاکستان واپس آیا تھا۔ 4فروری کو جب وہ واپس امریکہ جانے کے لیے کراچی ایئرپورٹ پر پہنچا تو اسے پرواز میں سوار ہونے سے روک دیا گیا، حالانکہ اس کے پاس تمام سفری دستاویزات موجود تھیں۔

ضیاءحسین کا کہنا تھا کہ ”مجھے اس پابندی کا اس وقت معلوم ہوا جب میں ایئرپورٹ پر پہنچا۔ وہاں بارڈر ایجنٹس نے مجھ سے کہا کہ ’ہم آپ کو جانے کی اجازت نہیں دے سکتے۔ہمیں ایک خفیہ ای میل موصول ہوئی ہے جس میں ہدایت کی گئی ہے کہ آپ کو امریکہ جانے سے روکا جائے۔“ضیاءحسین امریکی یونیورسٹی میں پوسٹ گریجوایشن کے طالب علم ہیں اور اسلامی تصوف کی تعلیم حاصل کر رہے ہیں۔امریکہ سے کراچی واپسی پرامریکی تحقیقاتی ایجنسی ایف بی آئی نے ان سے تفتیش کی تھی اور پوچھا تھا کہ وہ پاکستان میں کیا کرتے ہیں اور یہاں امریکہ میں کیا کر رہے ہیں؟ انہوں نے یہ بھی کہا تھا کہ جب تم پاکستان سے واپس آﺅ گے تو تم سے مزید پوچھ گچھ کی جائے گی۔

’آپ جہاز پر نہیں بیٹھ سکتیں کیونکہ آپ کا لباس۔۔۔‘ ائیرلائن نے 10 سالہ بچی کو ایسی بات کہہ کر جہاز پر چڑھنے سے روک دیا کہ دنیا میں ہنگامہ برپاہوگیا

رپورٹ کے مطابق امریکہ کی طرف سے جن مسلم ممالک کے شہریوں کے امریکہ داخلے پر پابندی عائد کی تھی ان میں پاکستان شامل نہیں تھا لیکن اس باوجود ضیاءکو داخل ہونے سے روک دیا گیا۔ جب اس حوالے سے امریکی کسٹمز اور بارڈرپروٹیکشن سے رابطہ کیا گیا تو انہوں نے معاملے پر ردعمل ظاہر کرنے سے انکار کر دیا۔ ضیاءحسین اس سے قبل انڈرگریجوایٹ کی ڈگری بھی امریکہ سے ہی سکالرشپ پر حاصل کر چکے ہیں۔جس کے بعد نہوں نے واپس پاکستان آ کر ’روش‘ کے نام سے ایک تنظیم کی بنیاد رکھی جس کا مقصد بچوں کو تعلیم فراہم کرنا ہے۔ضیاءحسین کی اس تنظیم کو امریکہ محکمہ داخلہ کی ویب سائٹ پر بھی جگہ دی گئی ہے۔

مزید : بین الاقوامی