آٹا، چینی بحران کے ذمہ دار آج بھی وزیراعظم کیساتھ کھڑے ہیں: اسفند یارولی

آٹا، چینی بحران کے ذمہ دار آج بھی وزیراعظم کیساتھ کھڑے ہیں: اسفند یارولی

  

پشاور(این این آئی) عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی صدر اسفندیارولی خان نے کہا ہے کہ چینی آٹا بحران بارے انکوائری رپورٹ نے واضح کردیا کہ اس حکومت کے لانے میں جن سرمایہ داروں کا ہاتھ تھا، جنہوں نے سرمایہ کاری کی، انہیں بدلے میں بہت کچھ دیا گیا، اگر کسی کو فرق پڑا ہے تو وہ صرف غریب عوام کو، جنہیں اس بحران میں دو وقت کی روٹی ملنا مشکل ہوگیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ رپورٹ پبلک کرنے کا کریڈٹ وزیراعظم عمران خان لینا چاہتے ہیں لیکن اب یہ سوال بھی ضرور اٹھے گا کہ جب چینی اور آٹا چور یہ سب گیم کھیل رہے تھے تو اس وقت حکومت اور ذمہ دار ادارے کہاں تھے،اب دیکھنا یہ بھی ہوگا کہ اپنے سرمایہ کار وزراء کو نیازی صاحب کون سی سزا تجویز کریں گے۔آج بھی یہی مافیا اور چور عمران کے دائیں بائیں بیٹھے ہیں، کرپشن کے خلاف نعرے لگانے والے اپنے وزراء کی چوری چھپانے کیلئے مختلف حیلے بہانے تلاش کرتے رہے ہیں، اب دیکھنا یہ ہوگا کہ اپنی ہی رپورٹ میں جہانگیر ترین،خسروبختیار اور دیگر اتحادیوں کے نام آنے کے بعد بحیثیت چیئرمین اقتصادی رابطہ کمیٹی عمران خان کیا کارروائی کریں گے۔ اگر واقعی بلاتفریق احتساب کیا گیا تو موجودہ کابینہ میں سے شاید کوئی وزیر یا مشیر نہیں بچے گا۔ آج اگر یہ رپورٹ آئی ہے تو عوامی ٹیکس کے پیسوں کی چوری کرنیوالوں اور عوام کو بحرانی کیفیت میں لے جانے والوں کے خلاف سخت سے سخت کارروائی کرنی ہوگی، اگر کوئی وزیر، مشیر یا وزیراعلیٰ بھی ملوث ہو تو اس کو سخت سے سخت سزا دینی ہوگی تب ہی غیرجانبدار احتساب نظر آئیگا۔

اسفند یار ولی خان

مزید :

علاقائی -