چین وائرس کے باوجود کمپیوٹر مینوفیکچر نگ پیداوار میں ریکارڈ اضافہ

  چین وائرس کے باوجود کمپیوٹر مینوفیکچر نگ پیداوار میں ریکارڈ اضافہ

  

ہیفے (شِنہوا)چین کی ایل سی ایف سی (ہیفے)الیکٹرانکس ٹیکنالوجی کمپنی لمٹیڈ نیمارچ میں 27 لاکھ 20 ہزار کمپیوٹر یونٹس تیار کئے ہیں جو کہ چینی ٹیکنالوجی کے بڑے ادارے لینووو کا سب سے بڑا پی سی آر اینڈ ڈی اور مینوفیکچرنگ بیس ہے جس سے ایل سی ایف سی نے ریکارڈ 10 ارب یوآن(تقریبا 1 ارب 41 کروڑ امریکی ڈالرز)ماہانہ منافع کمایا۔ایل سی ایف سی نے کہا ہے کہ 27 مارچ کو ایک لاکھ 24 ہزار 5سو کمپیوٹرز پیداواری لائن سے تیار ہوکر نکلے ہیں جو کہ مشرقی چین کے صوبہ انہوئی میں کمپیوٹر کے اس کاروباری ادارے کی روزانہ کی بنیاد پر ریکارڈ تعداد ہے۔ایل سی ایف سی کے چیف ایگزیکٹو بائی پھنگ نے کہا ہے کہ ہمیں ہر قسم کے کمپیوٹرز اور سرورز کے تقریبا 30 لاکھ یونٹ کے آرڈرز مل رہے ہیں جو کہ گزشتہ سال کے اسی عرصے کے دوران ملنے والے آرڈر کے مقابلے میں 3 گنا ہیں۔بڑے ڈسپلے والے الیکٹرانک ڈیوائسز اور ٹیبلٹس کرونا وائرس وبائی مرض کے پھیلا کے موقع پر بڑے پسند کئے گئے جبوائرس کے پھیلا کو قابو میں رکھنے لئے لوگ اپنے گھروں تک محدود ہوئے۔بائی کے مطابق ویڈیو کانفرنس، آن لائن کورسز لینے اور کمپیوٹرز گیمز کھیلنے جیسی سرگرمیوں کی وجہ سے نہ صرف گھروں تک محدود رہنے کا وقت قیمتی بن رہا ہے بلکہ کمپیوٹر ز اور ٹیبلیٹس کے آرڈز بھی بڑھ رہے ہیں کیونکہ یہ ان سرگرمیوں کے لئے لازمی آلات ہیں۔

مزید :

علاقائی -