کرونا سے فلم و سینماء کا بزنس متاثر ہوگا،شوبز شخصیات

  کرونا سے فلم و سینماء کا بزنس متاثر ہوگا،شوبز شخصیات

  

لاہور(فلم رپورٹر)شوبز کے مختلف شعبوں سے تعلق رکھنے والی شخصیات کا کہنا ہے کہ کرونا وائرس کی وبا کی وجہ سے فلم کے ساتھ ساتھ سنیما کا بھی کاروبار متاثر ہوگا۔شوبز شخصیات کا کہنا ہے کہ کرونا کے خاتمے کے بعد حکومت کوطویل عرصہ کیلئے سنیما انڈسٹری کو ٹیکس فری کرنا چایئے تاکہ مالکان سنیما کو بند کرنے کی بجائے حوصلے سے اپنا کام جاری رکھیں۔ کرونا وائرس کے باعث فلموں کی پروڈکشن نہیں ہورہی،موجودہ حالات میں عید کے موقع پرنمائش کیلئے پیش کی جانے والی فلموں کی ریلیز ممکن نظر نہیں آرہی اگر عید پر فلمیں ریلیز نہ ہوسکیں تو فلمی صنعت کو نا اقابل تلافی نقصان ہوگا۔کچھ لوگوں کا کہنا ہے کہ پنجابی فلموں کو زوال آچکا،اب پنجابی فلموں کا سنہری دور کبھی واپس نہیں آسکتا۔مگر اس کے باوجود لاہور میں ایک بار پھر پنجابی فلمیں بننی شروع ہوگئی ہیں اگر یہ سلسلہ تسلسل کے ساتھ جاری رہے تو وہ وقت دور نہیں جب ایک بار پھر لاہور میں ثقافتی سرگرمیاں عروج پر ہوں گی۔کم تعلیم یافتہ پروڈیوسرز نے پنجابی فلموں میں فحاشی کو پروموٹ کر کے انڈسٹری کو بدنام کرنے میں اہم کردار ادا کیا۔ شوبز کی سنجیدہ شخصیات کا کہنا ہے کہ ہمیں فلمی صنعت کی ترقی کے لئے ابن الوقت اور مفاد پرست لوگوں کو اپنی صفوں سے نکالنا ہوگا۔سائرہ نسیم،صبا ء کاظمی،اکرام اداس،سٹار میکر جرار رضوی،آغا حیدر،دردانہ رحمان،ظفر عباس کھچی،سٹار میکر جرار رضوی،ملک طارق،مجید ارائیں،طالب حسین،،پروڈیوسر شوکت چنگیزی،ظفر عباس کھچی،ڈی او پی راشد عباس،پرویز کلیم،نیلم منیر خان اور نجیبہ بی جی نے کہا کہ پاکستان فلم انڈسٹری میں ٹیلنٹ موجود ہے صرف سرمایہ کاری اور اسے اجاگر کرنے کی ضرورت ہے۔

ہمیں امید ہے کہ آنے والے دنوں میں فلم انڈسٹری کے حالات بہت بہتر ہو جائیں گے اور ہم سب بہت جلد کرونا کی مصیبت سے نجات حاصل کرنے میں کامیاب ہوجائیں گے اللہ تعالیٰ ہم سب کو اپنے حفظ و امان میں رکھے۔

مزید :

کلچر -