بھارتی فوجی بربریت مزید 5نوجوان شہید، نیا ڈومیسائل قانون مسترد، مقبوضہ کشمیر کے حالات مزید بگڑ جائیں گے، او آئی سی

بھارتی فوجی بربریت مزید 5نوجوان شہید، نیا ڈومیسائل قانون مسترد، مقبوضہ ...

  

سرینگر،اسلام آباد (آئی این پی) مقبوضہ جموں و کشمیر میں بھارتی سکیورٹی فورسز نے ددو الگ الگ جھڑپوں میں 9کشمیری نوجوانوں کو شہیدکردیا۔ہندوستانی فوج کی چنار کور نے ایک ٹویٹ میں کہاکہ کپواڑہ میں اتوار کے روز پانچ نوجوانوں کو شہید کیا گیا۔اس واقعے میں آرمی کا ایک جوان بھی اپنی زندگی سے ہاتھ دھو بیٹھا۔جبکہ دو شدید زخمی ہیں جبکہ آپریشن اب بھی جاری ہے۔ اس سے قبل ہفتے کی صبح مقبوضہ کشمیر میں جنوبی کشمیر کے ضلع کولگام میں ہفتے کے روز دمہال ہانجی پورہ کے نڑگام گاوں ہارڈمنڈ گوری میں 4 نوجوانوں کو ایک جھڑپ میں شہید کر دیا گیا۔ بھارتی فورسز کا کہنا تھا کہ ان کا تعلق حزب المجاہدین سے ہے۔اس دوران 3 مکانات کو بھی جلا دیا گیا۔جنوبی کشمیر کے مختلف علاقوں میں جمعے کی رات سے جگہ جگہ تلاشی کاروائیاں کی جارہی تھیں۔ علاوہ ازیں اسلامی ممالک میں تعاون کی تنظیم (او۔آئی۔سی) کے جنرل سیکریٹریٹ نے ’جموں وکشمیر ری آرگنائزیشن آرڈر 2020‘ کی منظوری پر گہری تشویش کا اظہار کیا ہے جس سے جموں وکشمیر میں آبادی کا تناسب تبدیل ہوسکتا ہے جو اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی متعلقہ قراردادوں کے تحت ایک مسلمہ متنازعہ علاقہ ہے۔ڈومیسائل قانون پر اثر انداز ہونیوالے اس قانون کی منظوری سے متنازعہ علاقے میں صورتحال مزید گھمبیر ہوجائے گی جو پہلے ہی 5 اگست 2019کو اس خطے کے بھارتی آئین میں خصوصی درجے کے ختم کرنے کے یک طرفہ اقدام سے انتہائی مخدوش حالات سے دوچار ہے۔او آئی سی جنرل سیکرٹریٹ جموں وکشمیر کے علاقے میں آبادی کے تناسب کو غیرقانونی طورپر تبدیل کرنے کی ہرکوشش کو مسترد کرتا ہے۔او آئی سی سربراہ اجلاس کے فیصلوں اور جموں وکشمیر پر وزراء خارجہ کونسل کی قرار دادوں کا حوالہ دیتے ہوئے جنرل سیکریٹریٹ نے جموں وکشمیر کے عوام کے ساتھ یک جہتی کا اعادہ کرتے ہوئے بین الاقوامی برادری سے یہ مطالبہ دوہرایا کہ اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی متعلقہ قراردادوں کے مطابق جموں وکشمیر کے مسئلہ کے حل کے لئے کوششوں کو تیز کیاجائے۔

او آئی سی

مزید :

صفحہ اول -