گندم، آٹا، چینی بحران پر فرانزک رپورٹ کا منتظر، عوام یقین رکھیں کوئی بھی طاقتور لابی قوم کا پیسہ کھانے کے قابل نہیں رہے گی: وزیراعظم

گندم، آٹا، چینی بحران پر فرانزک رپورٹ کا منتظر، عوام یقین رکھیں کوئی بھی ...

  

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر،مانیٹرنگ ڈیسک، نیوز ایجنسیاں)وزیراعظم عمران خان نے قوم کو آٹے اور چینی بحران کے ذمہ داروں کے خلاف کارروائی کی یقین دہانی کرائی ہے۔گزشتہ روز اپنے ٹوئٹر پیغام میں وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ میں کسی بھی کارروائی سے پہلے اعلیٰ سطحی کمیشن کی جانب سے مفصل فرانزک آڈٹ کے نتائج کا منتظر ہوں جو 25 اپریل تک مرتب کر لیے جائیں گے۔ ان نتائج کے سامنے آنے کے بعد ان شاء اللہ کوئی بھی طاقتور گروہ (لابی) عوامی مفادات کا خون کر کے منافع سمیٹنے کے قابل نہیں رہے گا۔گندم اور چینی کی قیمتوں میں یک لخت اضافے کی ابتدائی تحقیقاتی رپورٹ وعدے کے مطابق بغیر ردوبدل فوراً جاری کر دی گئی ہے اور تاریخ میں اس کی نظیر نایاب ہے۔انہوں نے کہا کہ ذاتی مفادات کی آبیاری اور سمجھوتوں کی رسم نے ماضی کی سیاسی قیادت کو اس اخلاقی جرات سے محروم رکھا جس کی بنیاد پر وہ ایسی رپورٹس کے اجراء کی ہمت نہیں کر پاتی تھیں۔واضح رہے کہ گزشتہ روز وفاقی تحقیقاتی ایجنسی (ایف آئی اے) کی تحقیقاتی رپورٹ میں انکشاف کیا گیا کہ ملک میں چینی بحران کاسب سے زیادہ فائدہ حکمران جماعت کے اہم رہنما جہانگیر ترین نے اٹھایا، دوسرے نمبر پر وفاقی وزیر خسرو بختیار کے بھائی اور تیسرے نمبر پر حکمران اتحاد میں شامل مونس الٰہی کی کمپنیوں نے فائدہ اٹھایا۔تحقیقاتی رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ وفاقی اور صوبائی حکومتوں کی نااہلی آٹا بحران کی اہم وجہ رہی۔دوسری جانب وزیراعظم عمران خان نے چینی بحران کے ذمے داروں کو سزا دینے کا عزم ظاہرکرتے ہوئے تحقیقات کرنیوالی کمیٹی کی سفارش پر انکوائری کمیشن قائم کر دیا ہے۔ یہ کمیشن انکوائری ایکٹ 2017 کے تحت قائم کیا گیا ہے اور یہ پہلے ہی اپنا کام شروع کر چکا ہے۔انکوائری کمیشن کی 9 ٹیمیں بحران سے فائدہ اٹھانے والی شوگر ملز کا فرانزک آڈٹ کر رہی ہیں،ان میں جہانگیر ترین کی شوگر ملز بھی شامل ہیں۔کمیشن اپنا کام 40 دنوں میں مکمل کرے گا۔

وزیراعظم

مزید :

صفحہ اول -