لاہور، لاک ڈاؤ ن میں تھوڑی دیر کیلئے نرمی، سی سی پی او کے حکم پر دوبارہ سختی شروع

  لاہور، لاک ڈاؤ ن میں تھوڑی دیر کیلئے نرمی، سی سی پی او کے حکم پر دوبارہ سختی ...

  

لاہور(خبرنگار) صوبائی دارالحکومت سمیت صوبہ بھر میں گزشتہ 13 روز سے جاری لاک ڈاؤن میں گزشتہ روز پولیس کی جانب سے نرمی، لاہور میں شہری کمسن بچوں سمیت سڑکوں اور بازاروں میں گھومنے لگے، جس پر اچانک پولیس حکام حرکت میں آ گئے اور ناکوں پر لاک ڈاؤن کو سخت کر دیا گیا۔ تفصیلات کے مطابق صوبہ بھر میں کرونا وائرس کی صورتحال پر قابو پانے اور دفعہ 144 کے تحت لگائے جانے والے لاک ڈاؤن کے دوران جہاں گزشتہ تین روز کے دوران انتہائی سختی کی گئی اور لاک ڈاؤن کو انتہائی سخت کر کے شہریوں کو چھ سے آٹھ گھنٹے روزانہ کیلئے گھروں سے نہ نکلنے دیا گیا وہاں لاک ڈاؤن کے 13ویں روز پولیس نے اچانک نرمی کر دی جس کیساتھ ہی شہری اتوار کی چھٹی منانے کیلئے گاڑیوں اور مو ٹر سائیکلوں پر کمسن بچوں کے ہمراہ نکل پڑے۔ اس دوران شہر کی بڑی شاہراؤں مال روڈ، شاہراہ قائد اعظم، شالیمار روڈ اور جیل روڈ سمیت دیگر اہم سڑکوں اور بازا ر و ں میں شہریوں کا رش بڑھ گیا اور شہری اتوار کی چھٹی منانے کے ساتھ ساتھ فیملیز کے ہمراہ گاڑیوں اور موٹر سائیکلوں پر نظر آنے لگے جس میں دیکھتے ہی دیکھتے شہریوں کی تعداد اور گاڑیوں کا رش سڑکوں اور بازاروں میں بڑھ گیا جس میں ڈبل سواری کے خوف کے باعث موٹر سائیکلوں پر زیادہ تر سنگل موٹر سائیکل سوار اور کمسن بچے نظر آئے جبکہ گاڑیوں پر دو سے تین فیملی کے افراد کمسن بچوں کے ہمراہ شاہراؤں اور سڑکوں پر گھومتے رہے اچانک پولیس حکام حرکت کے آ گئے اور سی سی پی او لاہور کی جانب سے وائرلیس میسج کے ذریعے حکم دیا گیا کہ شہر میں گزشتہ 13 روز 250 مقامات پر کی گئی ناکہ بندی کو سخت کیا جائے اور لاک ڈاؤن میں کی گئی نرمی کو ختم کیا جائے۔ جس کے ساتھ ہی اہم شاہراؤں اور سڑکوں سمیت اہم چوراہوں پر لگائے گئے ناکوں پر پولیس نے نرمی کا ہاتھ واپس لے کر لاک ڈاؤن سخت کر دیا۔کثر ناکوں پر پولیس اور شہریوں کے درمیان تکرار اور معمولی لڑائی جھگڑے کے واقعات بھی ہوئے ا۔پولیس کی جانب سے پہلے لاک ڈاؤن میں نرمی کر کے خود ہی بازاروں اور مارکیٹوں میں آنے کی اجازت دی گئی۔ شہریوں کے بازاروں اور سڑکوں پر آنے کے بعد پولیس کی جانب سے سختی کرنے پر شہری سراپا احتجاج بنے رہے۔ اس موقع پر شہریوں کا کہنا تھا کہ جب گھروں سے نکلے ہیں تو کسی ناکے پر پولیس نے روکا تک نہیں، صرف ان افراد کو روکا گیا جو دو یا تین سے زیادہ افراد گاڑیوں پر سوار تھے یا ڈبل سوار موٹر سائیکلوں کو پولیس نے سڑکوں پر آنے نہیں دیا۔۔ پولیس نے خود کی لاک ڈاؤن میں نرمی دکھائی جس پر فیملیز کے ساتھ چھوٹی موٹی گھروں کی ضروری اشیائے خریدنے کے لئے نکلے ہیں۔ اب پولیس نے ناکوں پر اور بازاروں کے کارنرز پرروک کر بدتمیزی کا مظاہرہ کر رہی ہے اس پر حکومت کو نوٹس لینا چاہیے جبکہ اس حوالے سے سی سی پی او لاہور ذوالفقار حمید کا کہنا ہے شہریوں کو لگائے گئے لاک ڈاؤن کے حوالے سے ذمہ داری کا مظاہرہ کرنا چاہیے اورکو پولیس کے ساتھ مکمل تعاون کرنا چاہیے۔

لاک ڈاؤن نرمی

مزید :

صفحہ اول -