لاک ڈاؤن میں کمی ہوگی یا اضافہ ابھی کچھ نہیں کہہ سکتے، اسد عمر

لاک ڈاؤن میں کمی ہوگی یا اضافہ ابھی کچھ نہیں کہہ سکتے، اسد عمر

  

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) وفاقی وزیر برائے منصوبہ بندی اسد عمر نے کہا ہے کہ موجودہ صورت حال میں یہ نہیں بتا سکتا کہ 14 اپریل کے بعد لاک ڈاؤن کی پابندیوں میں کمی کی جائے گی یا ان میں مزید اضافہ ہوگا۔پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے اسد عمر نے کہا کہ لاک ڈاؤن کے ملکی معیشت پر منفی اثرات پڑ رہے ہیں جن سے امیر اور غریب دونوں ہی متاثر ہورہے ہیں تاہم لاک ڈاؤن سے وائرس کا پھیلاؤ روکنے میں مدد ملی۔ پاکستان میں کرونا وائرس پھیلنے کی رفتار سست ہے جو حوصلہ افزا بات ہے۔ پاکستانی قوم نظم و ضبط کا مظاہرہ کررہی ہے اور یہی اس وبا سے مقابلے کا واحد طریقہ ہے تاہم بعض علاقوں میں احتیاطی تدابیر پر مکمل عمل درامد نہیں ہورہا۔ڈاکٹر اور طبی عملہ ہمارے ہیروز ہیں انہیں حفاظتی سامان کی فراہمی کیلئے ہر ممکن کوشش کی جارہی ہے۔وائرس پھیلنے سے صحت کے نظام پر بوجھ پڑ سکتا ہے، کوشش ہے صورت حال قابو سے باہر نہ ہو۔سیکیورٹی فورسز، پولیس اور رینجرز اہلکاروں کو بھی خراج تحسین پیش کرتا ہوں۔دریں اثناء وزار ت منصوبہ بندی وترقی کے ترجمان نے وفاقی وزیر اسدعمر سے منسوب آڈیو کال کوجعلی قرار دیدیا۔وزار ت منصوبہ بندی وترقی کے ترجمان نے کہاہے کہ اسدعمر اور کروناوائرس کے خلاف قومی کوششوں کے فوکل پرسن ٹھٹھہ کے نام سے منسوب زیر گردش آڈیو کال جھوٹی ہے۔ آڈیوکال کا عنوان یہ تھا کہ لاہور کی بی ایچ چوک سے ایک شخص نے کال کی تھی، یہ سب جھوٹ ہے۔

اسد عمر

مزید :

صفحہ اول -