موجودہ صورتحال میں لوڈشیڈنگ بند کر دی جائے‘ نثار ایڈوکیٹ

  موجودہ صورتحال میں لوڈشیڈنگ بند کر دی جائے‘ نثار ایڈوکیٹ

  

بنوں (بیورورپورٹ)ڈسٹرکٹ بار ایسوسی ایشن کے سابق صدر اور سابقہ امیدوار صوبائی اسمبلی ورہنما عوامی نیشنل پارٹی نثار خان ایڈوکیٹ منڈان نے کہا ہے موجودہ حالات میں چاہئے تھا کہ حکومت لوڈ شیڈنگ مکمل طور پر ختم کرتی تاکہ لوگ گھروں میں ٹی وی اور انٹر نیٹ کے سامنے بیٹھ کر وقت گزار سکیں اور باہر نہ نکلیں لیکن ان خالات میں بھی علاقہ منڈان میں عام دنوں کی نسبت ظالمانہ اور غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ اک سلسلہ جاری ہے اور صبح6بجے اڈے کاٹ کر بجلی بند کی جاتی ہے اور شام 7بجے بجلی بحال کی جاتی ہے اس خود ساختہ بجلی بندش کے بعد رات بھر گھنٹوں لوڈ شیڈنگ اور بجلی کی آنکھ مچولی کا سلسلہ جاری رہتا ہے کیونکہ فیڈر یکدم اوور لوڈ ہوجاتا ہے میڈیا کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے انہوں نے وزیر اعظم پاکستان،وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا،پیسکو کے صوبائی چیف اور ڈپٹی کمشنر بنوں سے پرزور مطالبہ کیا کہ وہ منڈان فیڈرپر ظالمانہ بجلی لوڈ شیڈنگ ختم کردیں ورنہ قوم سڑکوں پر نکلنے پر مجبور ہوگی انہوں نے کہا کہ حکومت کی طرف سے تین مہینوں تک بجلی بل جمع نہ کرانے کی سہولت اور طرف تو سہولت ہے لیکن تین مہینوں بعد غریب عوام تین مہینوں کا بل کہاں سے جمع کرائیں گے اسلئے حکومت سے مطالبہ کرتا ہوں کہ غریب عوام کے بجلی بل اور جرمانے معاف کئے جائیں اور پورے ملک کے عوام کے بل اور جرمانے معاف کرنا ممکن نہیں تو کم از کم جن لوگوں وک احساس پروگرام اور وزیر اعظم ریلیف پیکج میں شامل کیا گیا ہے ان کے جرمانے تو معاف کئے جائیں اسکے علاوہ منڈان یوٹیلٹی سٹور میں آٹا،چینی،دال،گھی اور دیگر روزمرہ کے استعمال کی اشیاء کی دستیابی کو یقینی بنایا جائے اور ریلیف پیکج میں تمام مستحق غریبوں کو شامل کرکے پیکج بڑھایا جائے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -