نوشہرہ، ٹائیگر فورس اور ریلیف پیکیج کا طریقہ کار مسترد، آل پارٹیز کانفرنس

  نوشہرہ، ٹائیگر فورس اور ریلیف پیکیج کا طریقہ کار مسترد، آل پارٹیز کانفرنس

  

نوشہرہ (بیورورپورٹ)نوشہرہ میں آل پارٹیز کانفرنس نے ٹائیگر فورس کی تشکیل اور ریلیف پیکج کے طریقہ کارحکومتی پارٹی کی جانب سے ضلعی انتظامیہ کو دی جانے والی لسٹوں کو مسترد کرتے ہوئے شفاف طریقہ کار بنانے کا مطالبہ کر دیا وفاقی و صوبائی وزراء اور اراکین اسمبلی گھروں میں بیٹھ کراسلام آبادسے ضلعی انتظامیہ اپنے منظور نظر چہیتوں کو نوازنے کیلئے ہدایات دے کر مستحقین اور ناداروں کی حق تلفی کر رہے ہیں ک ٹائیگر فورس عوام کی خدمت کیلئے نہیں بلکہ پی ٹی آئی نے اپنے بیروزگار اور منظور نظر کارکنوں کے لئے مال کماو فورس بنا دیا ہے ٹائیگر فورس بنانے کی بجائے سرکاری سکولوں کے اساتذہ، مقامی عمائدین، پولیوورکرز اور آئمہ مساجد پر مشتمل کمیٹیاں تشکیل دے کر فوری طور پر پیکج تقسیم کی جائے کیونکہ انتظامیہ کو دی جانے والی ریلیف پیکج لسٹ میں نادار غریب اور مزدوروں کی بجائے سابق بلد یاتی نمائندوں نے اپنے منظور نظر افراد کے ناموں کے لسٹ فراہم کی ہے ضلعی انتظامیہ پی ٹی آئی کی جانب سے دی گئی لسٹوں کی بجائے تمام سیاسی جماعتوں کی مشاورت سے ہر یونین کونسل کی سطح پر غیر جانبدارانہ کمیٹی تشکیل دے کر امداد اور پیکج کی تقسیم کو منصفانہ طریقے سے یقینی بنائیں اس سلسلے میں پاکستان پیپلز پارٹی پشاور ڈویژن کے صدر و سابق صوبائی وزیر لیاقت شباب کی جانب سے اپنی رہائشگاہ پر آپارٹی کانفرنس منعقد ہوئی اس کانفرنس کی صدارت پاکستان مسلم لیگ ن کے صونائی ترجمان اختیار ولی خان کی آل پارٹیز کانفرنس سے مسلم لیگ ن کے صوبائی ترجمان اختیار ولی خان،پاکستان پیپلز پارٹی پشاور ڈویژن کے صدر لیاقت شباب، عوامی نیشنل پارٹی کے ضلعی صدر جمال خان خٹک، پاکستان مسلم لیگ ن کے ارگنائزر جنرل سیکرٹری حاجی نواب خان، جمعیت علما اسلام (س) کے مولانا عرفان الحق حقانی، جمعیت علما اسلام پاکستان کے ضلعی جنرل سیکرٹری مفتی حاکم علی حقانی، عوامی ورکر پارٹی کے ضلعی صدر تاج نواب خٹک، قومی وطن پارٹی کے ولی الرحمان، جماعت اسلامی سرکل نوشہرہ کینٹ کے صدر افتخار احمد خان نے خطاب کیا اس موقع پر عوامی نیشنل پارٹی کے جنرل سیکرٹری انجینئر حامد علی خان، پاکستان پیپلز پارٹی کے جنرل سیکرٹری سعید اللہ، قومی وطن پارٹی کے جنرل سیکرٹری واجد علی بھی موجود تھے آل پارٹیز کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے مقررین نے کہا کہ ضلع نوشہرہ کی اپوزیشن جماعتیں مشکل کی اس گھڑی میں نوشہرہ کے عوام کو پی ٹی آئی کے کرپٹ اور بدعنوان ورکروں اور عہدیداروں کی رحم و کرم پر نہیں چھوڑ سکتے انہوں نے کہا ملک میں وبا پھیل گئی ہے اور ایسے حالات میں بھی نوشہرہ کے منتخب عوامی نمائندہ گان اپنے گھروں میں بیٹھ کر اسلام آباد سے ضلعی انتظامیہ کو ڈیکٹیٹ کر رہے ہیں انہوں کہا کہ آفت، ازمائش، مصیبت اور ان نازک حالات میں وزیر اعظم کے اپنے وزراء اور اراکین اسمبلی کو موقع سے سیاسی فائدہ اٹھانے کی ترغیب دینا شرم ناک ہے، وزیر اعظم قوم کو تسلی اور حوصلہ دینے کی بجائے ان کے حوصلے پست کرنے میں لگے ہوئے ہیں یہ کسی بھی قیادت کا شایا نشاں نہیں انہوں نے مزید کہا کہ ایسے حکمرانوں کو حکومت کرنے کا کوئی حق حاصل نہیں جو عوام کو وبائی حالات میں تن تنہا چھوڑ کر ملک کو آن لائن چلا رہے ہیں اس موقع پر 8رکنی اپوزیشن کمیٹی تشکیل دے دی گئی جو ضلعی انتظامیہ کے ساتھ عوامی مشکلات کے حل کے لئے ملاقات کرے گی نہوں نے کہا کہ ہم عوامی مشکلات کے حل کیلئے ضلعی انتظامیہ سے تعاون کرنے کیلئے تیار ہیں ۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -