وزیراعظم نے ثابت کیا کہ ملک میں کوئی بھی۔۔۔فردوس عاشق اعوان نے بڑے بڑوں کے لئے خطرے کی گھنٹی بجا دی

وزیراعظم نے ثابت کیا کہ ملک میں کوئی بھی۔۔۔فردوس عاشق اعوان نے بڑے بڑوں کے ...
وزیراعظم نے ثابت کیا کہ ملک میں کوئی بھی۔۔۔فردوس عاشق اعوان نے بڑے بڑوں کے لئے خطرے کی گھنٹی بجا دی

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)وزیراعظم کی معاون خصوصی برائے اطلاعات و نشریات ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے کہا ہے کہ وزیراعظم نے ثابت کیا کہ ملک میں کوئی بھی مقدس گائے کی حیثیت نہیں رکھتا،،وزیراعظم نے شخصیات کی بجائے قومی مفاد کو مقدم ہے،وزیراعظم شخصیات کی بجائے اداروں کو مضبوط بنانا چاہتے ہیں،5فیصد اشرافیہ نے 95فیصد عوام کے حقوق کو سلب کر رکھا ہے،وزیراعظم 95فیصد عوام کی آواز بنے ہیں،پاکستان کی سیاسی تاریخ میں خود احتسابی کی ایسی مثال نہیں ملتی،25اپریل کو چینی بحران سے متعلق کمیشن کے فرانزک رپورٹ کی انتظار ہے،وزیراعظم نے شفافیت کی راہ سیاسی مفاد کو بھی آڑے نہیں آنے دیا۔

نجی ٹی وی کےمطابق میڈیاسےگفتگو کرتےہوئےڈاکٹرفردوس عاشق اعوان نےکہاکہ وزیراعظم نےصوابدیدی اختیاراستعمال کرکے کابینہ میں ردوبدل کیا، وزیر اعظم اپنی ذمہ داریاں عوام کی امانت سمجھ کر نبھا رہے ہیں،وزیراعظم کورونا وبا سے نمٹنے کے اقدامات کا روزانہ جائزہ لیتے ہیں،ہم نے متحد قوم بن کر اس عالمی وبا کا مقابلہ کرناہے،عوام کی مشکلات کاخاتمہ حکومت کی اولین ترجیح ہے،وزیراعظم نےملک سےکرپشن کےخاتمےکاوعدہ کیاہے،وزیراعظم شخصیات کی بجائے ادارو ں کو مضبوط بنانا چاہتے ہیں،5فیصد اشرافیہ نے 95فیصد عوام کے حقوق کو سلب کر رکھا ہے،وزیراعظم 95فیصد عوام کی آواز بنے ہیں،پاکستان کی سیاسی تاریخ میں خود احتسابی کی ایسی مثال نہیں ملتی،حکومت کی پالیسیوں کا محور عوام کے مسائل کا ادراک ہے۔

ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے کہا کہ کسی کو بھی ذاتی مفاد کیلئے عوامی مفاد سے کھیلنے کی اجازت نہیں دی جا سکتی،عوام کے مفاد کے بیچ میں جو آئے گا اسے برداشت نہیں کیا جائے گا،کسی نے اگر عوامی مفاد کے خلاف کام کیا تو قانون کے مطابق نمٹا جائے گا،وزیراعظم نے ثابت کیا کہ ملک میں کوئی بھی مقدس گائے کی حیثیت نہیں رکھتا،وزیراعظم نے اپنے فیصلوں سے شفافیت اور بہتر نظام حکومت کے نئے معیار متعارف کرائے،وزیراعظم عمران خان عوامی مسائل کےتدارک کیلئے پرعزم ہیں،عوامی مفاد اور حقوق کی راہ میں کوئی رکاوٹ برداشت نہیں کی جائے گی،ریگولیٹری اداروں کی ذمہ داری کسی کے ذاتی مفاد کی بجائے عوامی مفاد کا تحفظ ہے،25اپریل کو چینی بحران سے متعلق کمیشن کے فرانزک رپورٹ کاانتظار ہے،وزیراعظم نے شخصیات کی بجائے قومی مفاد کو مقدم رکھا ہے ،وزیراعظم نے شفافیت کی راہ سیاسی مفاد کو بھی آڑے نہیں آنے دیا،وزیراعظم پر تنقید کرنے والوں میں ظرف ہونا چاہیے کہ وہ ان اقدامات کی تعریف کریں، اپوزیشن سیاسی پوائنٹ سکورنگ کے لیے پریس کانفرنسیں کر رہی ہے۔

مزید :

قومی -