مچھ میں بس سے اغواءکیے گئے 13مسافر قتل ، مقابلے میں ایک ایف سی اہلکار بھی شہید، صوبائی حکومت کا ملزمان کی فوری گرفتاری کا حکم

مچھ میں بس سے اغواءکیے گئے 13مسافر قتل ، مقابلے میں ایک ایف سی اہلکار بھی ...
مچھ میں بس سے اغواءکیے گئے 13مسافر قتل ، مقابلے میں ایک ایف سی اہلکار بھی شہید، صوبائی حکومت کا ملزمان کی فوری گرفتاری کا حکم

  


کوئٹہ (مانیٹرنگ ڈیسک) بلوچستان کے ضلع بولان کے علاقے مچھ کے قریب مسافر کوچ سے اغوا کئے گئے 13 مسافروں کی لاشیں قریبی پہاڑوں سے برآمد کر لی گئی جبکہ ایف سی اہلکار سمیت تمام 14لاشیں سول ہسپتال منتقل کردی گئیں ہیں ۔لیویز ذرائع کے مطابق مچھ کے قریب گشتری کے مقام پر نامعلوم مسلح افراد نے گزشتہ شب دو مسافر کوچ سے 13 افراد کو اغوا کرلیا تھا،جن کی لاشیں صبح قریبی پہاڑوں سے مل گئیں۔ اسسٹنٹ کمشنر کاشف نبی کے مطابق بس پر دومقامات پر حملہ کیاگیا جس کی وجہ سے سیکیورٹی فورسز بروقت نہ پہنچ سکیں ، اغواءکاروں نے فائرنگ کرکے تمام افراد کو موت کے گھاٹ اُتاردیا اور لاشوں کو سول ہسپتال مچھ منتقل کردیاگیاہے جہاں سے کوئٹہ منتقلی کے انتظامات کیے جارہے ہیں ۔ اُنہوں نے بتایا کہ قتل کئے گئے افراد کا تعلق پنجاب کے علاقوں صادق آباد، راجن پور اور دیگر علاقوں سے ہے۔ گزشتہ رات مسافروں کے اغوا ءکے دوران مسلح افراد اور سیکورٹی فورسز کے درمیان فائرنگ کے تبادلہ کے دوران ایک سیکیورٹی اہلکار شہید اور دو زخمی ہوگئے تھے۔ کاشف نبی کے مطابق مسافر بسوں کو سیکیورٹی فراہم کرتے ہیں ، قافلوں کی صورت میں روانگی ہوتی ہے تاہم اب مزید سیکیورٹی دی جائے گا۔ دوسری طرف وزیراعلیٰ بلوچستان نے ہلاکتوں کا نوٹس لیتے ہوئے فوری طورپر رپورٹ طلب کرلی ہے اور جاں بحق افراد کے ورثاءکی مالی امداد کا اعلان کردیا۔اُنہوں نے سرکاری خرچ پر میتیں آبائی علاقوں میں پہنچانے کی ہدایت کرتے ہوئے حکم دیاہے کہ مغویوں کو جلد از جلد بازیاب کرایاجائے ۔

مزید : کوئٹہ /Headlines