سابق کھلاڑی آپسی تلخیوں کی بجائے ہاکی کی ترقی کیلئے کام کریں ، صدر پی ایچ ایف

سابق کھلاڑی آپسی تلخیوں کی بجائے ہاکی کی ترقی کیلئے کام کریں ، صدر پی ایچ ایف

لاہور (سپورٹس رپورٹر)پاکستان ہاکی فیڈریشن (پی ایچ ایف)کے صدر بریگیڈئر (ر) خالد سجاد کھوکھر نے کہا ہے کہ حکومت کی جانب سے فیڈریشن کو ملنی والی گرانٹ کا ایک پیسہ بھی ضائع نہیں ہونے دینگے ، پاکستان ہاکی لیگ کے لئے جلد این او سی ملنے کیلئے پر امید ہیں ، ہم ماضی کی غلطیوں کو دہرانا نہیں چاہتے ، سابق کھلاڑیوں کو آپس میں تلخیاں ڈالنے کی بجائے ہاکی کی ترقی کیلئے کردار ادا کرنا ہو گا، اولمپک گیمز اور ہاکی ورلڈ کپ کیلئے کوالیفائی کرنا پہلا ہدف ہے ،اولمپک گیمز میں قومی ہاکی ٹیم کے نہ ہونے پر دکھ ہے ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے جمعہ کو نصیر بندہ ہاکی اسٹیڈیم اسلام آباد میں پاکستان ہاکی فیڈریشن کے سیکرٹری اولمپین شہباز سینئر اور پنجاب وویمنز ہاکی ایسو سی ایشن کی سیکرٹری راحت خان کے ہمراہ میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا ۔ بریگیڈئر (ر) خالد سجاد کھوکھر نے کہاکہ وزیر اعظم نواز شریف ہاکی کی ترقی کیلئے ذاتی دلچسپی لے رہے ہیں اور انہوں نے قومی کھیل کے فروغ کیلئے فیڈریشن کو ہدایات بھی دیں ہیں جبکہ وزیر اعظم کی قومی کھیل کی بحالی کیلئے ذاتی دلچسپی لینے پر انکے مشکور ہیں ۔انہوں نے کہاکہ ماضی کی غلطیاں دہرانا نہیں چاہتے،سابق کھلاڑیوں کو جھگڑے نہیں کرنے چاہیے جبکہ انہیں جھگڑوں کے بجائے ہاکی کی ترقی کے لیے کردار ادا کرنا ہوگا۔صدر پاکستان ہاکی فیڈریشن نے کہاکہ اولمپک گیمز اور ہاکی ورلڈ کپ کیلئے کوالیفائی کرنا ہمارا پہلا ٹارگٹ ہے ، ہاکی کیلئے مختص فنڈز کا ایک پیسہ بھی ضائع نہیں کرینگے۔پاکستان ہاکی لیگ کے حوالے سے ان کا کہنا تھا کہ پی ایچ ایل کے انعقاد کیلئے فیڈریشن کیساتھ ساتھ حکومت بھی سنجیدہ ہے اور اسکے جلد این او سی جاری ہونے کیلئے بھی ہم پر امید ہیں ، ہاکی لیگ میں بڑی تعداد میں غیر ملکی کھلاڑیوں نے شرکت پر آمادگی ظاہر کی ہے ۔ اس موقع پر پاکستان ہاکی فیڈریشن کے سیکرٹری شہباز سینئر کا کہنا تھا کہ اولمپک گیمز میں شرکت نہ کرنے پر وہ کھلاڑیوں کو درد کو خود محسوس کر رہے ہیں ، اولمپک گیمز میں شرکت کرنا کسی بڑئے اعزاز سے کم نہیں ۔ انہوں نے بتایا کہ ہماری کوشش ہے کہ زیادہ سے زیادہ ڈومیسٹک ایونٹس منعقد کروائے جائیں ،قومی سینئر ٹیم کیساتھ ساتھ جونیئر ٹیم کی صلاحیتوں کو بہتر بنانے کیلئے خصوصی توجہ دی جا رہی ہے جبکہ قومی ٹیم کی کارکردگی کو بہتر بنانے کے لیے پلیئرز پول کو بڑھائیں گے اور با صلاحیت کھلاڑیوں کو اس کا حصہ بنائیں گے۔

مزید : کھیل اور کھلاڑی


loading...