عمران خان نے منی لانڈرنگ ،ٹیکس چوری اور اثاثے چھپائے ،نااہلی کا ریفرنس دائر کر دیا ،مکمل ثبوت ہیں :زبیر عمر

عمران خان نے منی لانڈرنگ ،ٹیکس چوری اور اثاثے چھپائے ،نااہلی کا ریفرنس دائر ...
عمران خان نے منی لانڈرنگ ،ٹیکس چوری اور اثاثے چھپائے ،نااہلی کا ریفرنس دائر کر دیا ،مکمل ثبوت ہیں :زبیر عمر

  


اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) وزیر مملکت برائے نجکاری کمیشن زبیر عمر نے کہا ہے کہ عمران خان نے 1981ء سے لے کر 2015ء تک ٹیکس چوری، منی لانڈرنگ اور اثاثہ جات کو اپنے گوشواروں میں کم ظاہر کیا جبکہ آف شور کمپنی کو تین سال سے چھپائے رکھا۔

نجی ٹی وی ’’جیو نیوز ‘‘ کے مطابق زبیر عمر کا کہنا تھا کہ عمران خان کے خلاف سپیکر قومی اسمبلی کے پاس تمام ثبوت اور تفصیلات کے ساتھ ایک ریفرنس فائل کیا ہے جس میں عمران خان کے 1981ء سے لے کر 2015ء تک کے ٹیکس، منی لانڈرنگ اوراثاثہ جات کو اپنے گوشواروں میں کم ظاہر کرنا اور چھپایا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ عمران خان نے 1983ء سے انگلینڈ میں دو لاکھ پاؤنڈ سے ایک فلیٹ خریدا اور انہوں نے سالانہ اپنی ایک لاکھ پاؤنڈ آمدن ظاہر کی جبکہ انہوں نے دو لاکھ پاؤنڈ کا فلیٹ کس طرح خرید لیا؟ عمران خان 2016ء میں آف شور کمپنی میں پکڑے گئے ، اس آف شور کمپنی کو 1983ء سے کر لے 2016ء تک چھپائے رکھا،پرویز مشرف کے دور حکومت میں کالے دھن کو سفید کرنے کے لئے ٹیکس ایمنیسٹی سکیم متعارف کرائی گئی جو عام لوگوں کے لئے تھی، ان کا فلیٹ پہلے ان کے نام تھا اس کے بعد انہوں نے خود بتایا کہ انگلینڈ والا فلیٹ آف شور کمپنی کیلئے بنایا تھا اور اس کمپنی کو ٹیکس ریکارڈ میں ظاہر نہیں کیا گیا۔ انہوں نے کہا کہ عمران خان نے 1981ء سے لے کر 2001ء تک اپنی آمدن 56لاکھ روپے ظاہر کی جبکہ انہیں ایک کروڑ دس لاکھ آمدن 2001ء میں باہر سے آئی جس میں سے 65لاکھ روپے سے بنی گالا میں زمین خریدی گئی۔انہوں نے کہا کہ عمران خان کے خلاف آئین کے آرٹیکل 63کے تحت سپیکر قومی اسمبلی کے پاس ریفرنس تمام ثبوت اور تفصیلات کے ساتھ فائل کر دیاہے۔

مزید : قومی


loading...