سرینگر ،قابض فوجیوں کی فائرنگ سے مزید 3کشمیری شہید ،300سے زائد زخمی

سرینگر ،قابض فوجیوں کی فائرنگ سے مزید 3کشمیری شہید ،300سے زائد زخمی

سری نگر (آئی این پی)مقبوضہ کشمیر میں قابض بھارتی فوج کی ظالمانہ کاروائیوں کا سلسلہ نہ رک سکا ،جمعہ کو بھارتی فوج کی فائرنگ کے نتیجے میں مزید 3کشمیر ی شہید اور 300سے زائد زخمی ہوگئے ، کرفیو کے باوجود وادی بھر میں لوگ سڑکوں پر نکل آئے اور احتجاجی مظاہرے کیے ،وادی میں مسلسل کرفیو کی وجہ سے خوراک اور ادویات کی قلت پیدا ہو گئی،مقبوضہ کشمیر میں مظاہرین کے خلاف پیلیٹ گنز کے استعمال پر ایمنسٹی انٹرنیشنل انڈیا بھی بول پڑا اور وادی میں بھارتی افواج کی جانب سے پیلیٹ گنز کے استعمال پر فوراً پابندی لگانے کا مطالبہ کر دیا ۔میڈیا رپورٹس کے مطابق مقبوضہ کشمیر میں قابض بھارتی فوج کی ظالمانہ کاروائیوں کا سلسلہ جاری ہے ۔ بھارتی فوج کی فائرنگ سے مزید 3کشمیر ی شہید اور 300سے زائد زخمی ہوگئے۔بھارتی فورسز نے 45سالہ محمد مقبول کو ضلع بڈگام کے علاقے چادورا میں فائرنگ کرکے شہید کردیا جس کے بعد علاقے میں احتجاجی مظاہرے شروع ہوگئے ۔ضلع میں خان صاحب کے علاقے میں سیکورٹی فورسز نے مظاہرین پر اندھا دھند فائرنگ کردی جس کے نتیجے میں ظہور احمد شہید ہوگیا۔سوپور میں بھی بھارتی فوج نے ایک شہری کو شہید کردیا۔مقبوضہ وادی میں بھارتی مظالم کے خلاف ہڑتال اور عوامی مظاہرے جاری ہیں ، غاصب افواج کشمیریوں کی آواز کچلنے کے لیے طاقت کا استعمال کر رہی ہے ۔ مقبوضہ کشمیرمیں موبائل اور انٹرنیٹ سروس معطل ہے جبکہ مسلسل 28ویں روز سے جاری سخت کرفیو کی وجہ سے خوراک کی اشیا اور ادویات کی قلت پیدا ہو گئی ہے ۔ برہان وانی کی شہادت کے بعد اب تک بھارتی ریاستی مظالم سے70بے گناہ کشمیری شہید اور 6 ہزار زخمی ہو چکے ہیں۔گزشتہ روز مظاہروں میں شریک 500 افراد کو گرفتار کرلیا تھا۔

مزید : علاقائی


loading...