ٹی او آرز کی تیاری میں اپوزیشن جماعتوں کی مداخلت کیخلاف نظرثانی کی اپیل کے قابل سماعت ہونے پر فیصلہ محفوظ

ٹی او آرز کی تیاری میں اپوزیشن جماعتوں کی مداخلت کیخلاف نظرثانی کی اپیل کے ...

لاہور(نامہ نگارخصوصی)لاہور ہائیکورٹ نے پانامالیکس کی تحقیقات کے لئے ٹی او آرز کی تیاری میں اپوزیشن جماعتوں کی مداخلت کے خلاف نظرثانی کی اپیل کے قابل سماعت ہونے پر فیصلہ محفوظ کر لیاہے۔جسٹس شاہد کریم نے لائرز فاؤنڈیشن فار جسٹس کی درخواست پر سماعت کی، درخواست گزار کے وکیل نے موقف اختیار کیا کہ پاکستان کمیشن آف انکوائریز ایکٹ 1956کی دفعہ 3کے تحت کسی بھی معاملے کی تحقیقات کیلئے کمیشن قائم کرنا وفاقی حکومت کا صوابدی اختیار ہے لیکن حکومت قانون کی خلاف ورزی کرتے ہوئے اپوزیشن جماعتوں کو ٹی او آرز کی تیاری میں شامل کر رہی ہے اور ان سے مشاورت کی جا رہی ہے ، اپوزیشن جماعتیں حکومت کے خلاف احتجاج کرنے کی دھمکی بھی دی رہی ہیں جس کی وجہ سے حکومت اپوزیشن جماعتوں کو ٹی او آرز کی تیاری میں شامل کرنے پر مجبور ہے، انہوں نے مزید موقف اختیار کیا کہ سپریم کورٹ بے نظیر بھٹو بنام وفاقی حکومت کیس میں یہ طے کر چکی ہے کہ اپوزیشن جماعتیں ہمیشہ وفاقی حکومت کی وفادار رہیں گی، انہوں نے کہا کہ تمام آئینی نکات کے باوجود سنگل بنچ نے ان کی درخواست کو ناقابل سماعت قرار دے کر مسترد کر دی ،سنگل بنچ کا فیصلہ کالعدم کرتے ہوئے حکومت کو ٹی او آرز کی تیاری کے لئے اپوزیشن جماعتوں سے مشاورت کرنے سے روکا جائے اور حکومت کو پاکستان کمیشن آف انکوائریز ایکٹ 1956کی دفعہ 3 پر سختی سے عملدرآمد کا حکم دیا جائے، سماعت کے بعد عدالت نے نظرثانی کی درخواست کے قابل سماعت ہونے پر فیصلہ محفوظ کر لیاہے۔

مزید : صفحہ آخر


loading...