واپڈا کے دو افسروں کو ترقیاں دینے کیخلاف چیئرمین واپڈا کی درخواست مسترد

واپڈا کے دو افسروں کو ترقیاں دینے کیخلاف چیئرمین واپڈا کی درخواست مسترد

لاہور(نامہ نگارخصوصی)سپریم کورٹ نے واپڈا کے دو افسروں کو اگلے عہدے پر ترقیاں دینے کے خلاف چیئرمین واپڈا کی درخواست مسترد کر دی۔سپریم کورٹ لاہوررجسٹری میں جسٹس میاں ثاقب نثار کی سربراہی میں دو رکنی بنچ نے چیئرمین واپڈ اکی درخواست پر سماعت کی، درخواست گزار کے وکیل نے موقف اختیار کیا کہ وفاقی سروس ٹربیونل نے واپڈا کے گریڈ 14کے افسر محمد علیم اور گریڈ 17کے افسر نوید قریشی کو اگلے عہدوں میں ترقی دینے کا حکم دیا ہے جو حقائق کے منافی ہے ، واپڈا اتھارٹی ختم ہونے کے بعد دونوں افسرں کے ذیلی محکمے اور عہدے ہی ختم ہو گئے ہیں، اب ان افسروں کو تعینات کرنے کی جگہ ہی نہیں ہے، سروس ٹربیونل کے فیصلے کے بعد واپڈا کے رولز میں بھی ترمیم کر دی گئی ہے ،سروس ٹربیونل کا دونوں افسروں کو ترقی دینے کا فیصلہ کالعدم کیا جائے، دونوں افسروں کے وکیل نے موقف اختیار کیا کہ اگر ذیلی محکمے اور عہدے ختم ہو گئے تو کیا اس کے ساتھ ملازمین کی ترقی کا حکم بھی ختم ہو گیا ہے، یہ بنیادی آئینی حقوق کی خلاف ورزی ہے، تفصیلی دلائل سننے کے بعد عدالت نے واپڈا کے دو افسروں کو اگلے عہدے پر ترقیاں دینے کے خلاف چیئرمین واپڈا کی درخواست مسترد کر دی ، عدالت نے قرار دیا ہے کہ اگر کسی سرکاری افسر کا ترقی کا حق پیدا ہو جائے تو اسے واپس نہیں لیا جا سکتا، واپڈا اپنے دونوں افسروں کو سروس ٹربیونل کے فیصلے کے مطابق اگلے عہدوں پر ترقی دے۔

مزید : صفحہ آخر


loading...