انڈیا سے سفارتی و تجارتی تعلقات ختم اور الگ مسلم اقوام متحدہ بنائی جائے: حافظ سعید

انڈیا سے سفارتی و تجارتی تعلقات ختم اور الگ مسلم اقوام متحدہ بنائی جائے: حافظ ...

لاہور( خبر نگار خصوصی)امیر جماعۃالدعوۃ پاکستان پروفیسر حافظ محمد سعید نے کہا ہے کہ کشمیر کو انڈیا کا اندرونی مسئلہ قرار دینا نہتے کشمیریوں کے قتل عام کی شہ دینے کے مترادف ہے۔اقوام متحدہ اپنا موقف تبدیل نہیں کرتی تو مسلمان ملک اس سے علیحدگی اختیا رکر لیں۔ انڈیا سے سفارتی و تجارتی تعلقات ختم اور اپنی الگ مسلم اقوا م متحدہ بنائی جائے۔ حکومت آلو پیاز کی تجارت ختم اور چکوٹھی میں روکے گئے ٹرک کشمیری بھائیوں کیلئے لیجانے کی اجازت دے۔چوہدری نثارکے آئینہ دکھانے پرراجناتھ سنگھ سار ک کانفرنس چھوڑ کر فرار ہو ئے۔ بانی پاکستان نے کشمیر کو پاکستان کی شہ رگ قرار دیا۔ حکمران اس بنیاد پر اپنی کشمیر پالیسی ازسر نو ترتیب دیں۔مسلمانوں کا بہتا ہوا خون دعوت دیتا ہے کہ مسلمان ملک اسلام دشمن قوتوں سے دوستیاں و معاہدات ختم کریں اور مظلوم مسلمانوں کی مد د کا فریضہ سرانجام دیں۔جامع مسجد القادسیہ میں خطبہ جمعہ کے دوران انہوں نے کہاکہ کشمیریوں نے قربانیاں پیش کرکے تحریک آزادی کو جس موڑ پر پہنچا دیا ہے دنیا کو اس کی توقع نہیں تھی۔ یہ زبردست موقع ہے کہ پاکستان کشمیریوں کی تحریک آزادی کا کھل کر ساتھ دے۔ اگر پاکستان نے کسی دباؤ کا شکار ہو کر مظلوم بھائیوں کا ساتھ نہ دیا تواللہ کی ناراضگی کے سبب وہ خود بھی مسائل سے چھٹکارا حاصل نہیں کر سکے گا۔مسلم حکمرانوں کو چاہیے کہ وہ او آئی سی میں اس مسئلہ کو اٹھائیں اور اپنے فیصلے خود کئے جائیں۔ ہندوستان سے اپنے سفیر واپس بلائے جائیں اور اس کی مصنوعات کا بائیکاٹ کیا جائے۔ سب سے پہلے پاکستان کو یہ کام کرنا چاہیے۔ کشمیر میں بھارتی مظالم اورغذائی قلت کاشکارمسلمان کشمیر ی بھائیوں کی کھل کر مددکی جائے۔

حافظ سعید

لاہور(خبر نگار خصوصی)فلاح انسانیت فاؤنڈیشن کی جانب سے امدادی سامان مقبوضہ کشمیر بھجوانے کی اجازت نہ ملنے پر تین روز لائن آف کنٹرول کے قریب چکوٹھی میں دھرنا دینے کے بعد چوتھے روز جمعہ کو مظفر آباد میں چہلہ بانڈی سے آزادی چوک تک احتجاجی ریلی نکالی گئی جس میں فلاح انسانیت فاؤنڈیشن کے ہزاروں رضاکاروں نے شرکت کی۔ریلی کی قیادت جماعۃ الدعوۃ کے مرکزی رہنما پروفیسر حافظ عبدالرحمان مکی نے کی۔ریلی کا آغاز چہلہ بانڈی سے ہوا اور لوئر پلیٹ ،سی ایم ایچ چوک ،بینک روڈ ،تانگہ سٹینڈ سے ہوتی ہوئی آزادی چوک پہنچی۔شرکاء نے ہاتھوں میں پاکستانی پرچم اٹھا رکھے تھے اور کشمیریوں سے رشتہ کیا لاالہ اللہ،کشمیر بنے گا پاکستان،حافظ محمد سعید کا پیغام ،کشمیر بنے گا پاکستان ،ایل او سی روند دو،آرپار جوڑ دو کے نعرے لگاتے رہے۔احتجاجی ریلی کے شہر سے گزرتے وقت مارکیٹیں ،دکانیں بند تھیں اور تاجر حضرات بھی شرکاء کے ساتھ یکجہتی کا اظہار کرتے ہوئے ہاتھ ہلا کر نعروں کا جواب دیتے رہے۔فلاح انسانیت فاؤنڈیشن کی احتجاجی ریلی میں ڈاکٹروں و پیرا میڈیکل سٹاف کی ٹیم بھی شامل تھی جنہیں مقبوضہ کشمیر جانے کی اجازت نہیں ملی۔ریلی کی سیکورٹی کے سخت انتظامات کئے گئے تھے۔ایمبولینس گاڑیاں بھی شرکاء کے ہمرا ہ تھیں۔آزادی چوک پہنچنے پر بڑے جلسہ عام کا انعقاد کیا گیا جس سے جماعۃ الدعوۃ کے مرکزی رہنما حافظ عبدالرحمان مکی،امیر جماعۃ الدعوۃ آزاد کشمیر مولانا عبدالعزیز علوی،مولانا نصر جاوید و دیگر ،حریت کانفرنس کے رہنما مشتاق الاسلام ،پاسبان حریت کے چیئرمین عزیرغزالی، رفیوجیز یوتھ فیڈریشن کے صدر محمد صدیق داؤد ،جماعۃ الدعوۃ کے مرکزی رہنما ابو احمد محبوب و دیگر نے خطاب کیا۔جلسہ عام کے اختتام پر بھارتی ترنگا بھی نذر آتش کیا گیا۔اس موقع پر شرکاء نے برہان تیرے خون سے انقلاب آئے گا،آسیہ اندرا بی ہم آ رہے ہیں۔و دیگر نعرے لگائے گئے۔جماعۃ الدعوۃ کے مرکزی رہنما پروفیسر حافظ عبدالرحما ن مکی نے کہا کہ اہل پاکستان فلاح انسانیت فاؤنڈیشن کے ہراول دستے کے لئے دعا گو ہیں۔وہ سرینگر کے بھائیوں کے لئے امدادی سامان لے کر چکوٹھی بیٹھے ہیں۔جماعۃ الدعوۃ کا امدادی قافلہ امدادی سامان،ادویات لے کر چا ردن سے چکوٹھی موجود ہے۔سامان بھجوانے کے لئے اقوام متحدہ کو درخواست کی گئی لیکن اسکا جواب زخموں پر نمک چھڑکنے کے متراد ف ہے۔جب فلاح انسانیت فاؤنڈیشن نے اقوام متحدہ میں یادداشت پیش کی کہ،پیلٹ گن سے زخمی ہونے والوں کے لئے ادویات لے کر جانا چاہتے ہیں۔قوموں کا جمہوری طریقہ یہی ہے۔مگر افسوس کہ اقوام متحدہ کے دفترکی جانب سے صاف جواب دیا گیا کہ امدادی سامان کے لئے راستہ دلواناان کاکام نہیں۔اقوام متحدہ کا یہ رویہ درست نہیں ہے۔بیس کیمپ میں بیٹھ کر اقوام متحدہ والے سب جانتے ہیں کہ مقبوضہ کشمیر میں ہسپتالوں میں دوائیاں نہیں،فوجی ہسپتالوں میں گھس کر زخمیوں کو مار رہے ہیں۔

فلاح انسانیت فاؤنڈیشن

مزید : صفحہ آخر


loading...