حکومتی احکامات کے باوجود ڈاکخانہ کوسرکاری ڈاک ملنا شروع نہ ہوئی

حکومتی احکامات کے باوجود ڈاکخانہ کوسرکاری ڈاک ملنا شروع نہ ہوئی

ملتان(جنرل رپورٹر)سرکاری اداروں کو ایک دوسرے پر اعتماد نہیں تو عوام کیسے کرے؟حکومت کی جانب سے احکامات کے باوجود ڈاکخانہ کو تاحال سرکاری ڈاک ملنا شروع نہ ہوئی تفصیل کے مطابق وفاقی حکومت کی جانب سے ایک مراسلہ کے تحت تمام سرکاری اداروں کو احکامات جاری کئے گئے تھے کہ آئندہ تمام سرکاری ڈاک نجی کمپنیوں (بقیہ نمبر26صفحہ11پر )

کی بجائے سرکاری اداروں سے بھجوائی جائے لیکن تاحال اس حکم پر کوئی عملدرآمد نہ ہوا ہے اور پرائیویٹ کارگو کمپنیاں سرکاری افسران کو خوش کرکے لاکھوں روپے ماہانہ فائدہ اٹھارہی ہیں ‘سرکاری افسران کااس بارے موقف ہے کہ ڈاکخانوں سے بھجوائی گئی ڈاک بہت زیادہ تاخیر سے پہنچتی ہے اور سرکاری کام میں حرج ہوتا ہے جس کے باعث نجی کمپنیوں کا سہارا لیا جاتا ہے جبکہ شہریوں جمیل‘ فراز‘ علمدار‘ نواز‘ علی‘ گلزار ‘رضوان‘ احمد خان‘ جاوید ‘ارشد ودیگرکا اس بارے ’’پاکستان‘‘سے گفتگو کرتے ہوئے کہناہے کہ جب سرکاری اداروں کو ہی ایک دوسرے کی کارکردگی پر اعتماد نہیں ہے تو عوام کیسے کرے گی۔ سرکاری ڈاکخانوں کا خسارہ ختم کرکے اسے منافع بخش کاروبار بنانے کے لئے حکومت کو اپنے احکامات پر سختی سے عملدرآمد کروانا ہوگا۔

سرکاری ڈاک

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...