سرپنچ کے حکم پر بزرگ کی بھری پنچایت میں تذلیل سر پر جوتے مارے گئے

سرپنچ کے حکم پر بزرگ کی بھری پنچایت میں تذلیل سر پر جوتے مارے گئے

میر ہزارخان (نمائندہ پاکستان) پنچائت میں سرپنچ کے حکم پر بزرگ شہری کو گھٹنوں بھر بٹھا کر سرمیں 5جوتے مارے گئے جوتے مارنے کے دوران اسکے مخالف دائرہ ڈال کر بھنگڑا ڈالتے رہے جتوئی پولیس نے ڈی پی او مظفرگڑھ کے حکم پر(بقیہ نمبر33صفحہ7پر )

مقدمہ درج گرفتاریوں کیلئے چھاپے جاری یہ افسوس ناک واقعہ جتوئی شہر کے گنجان آباد علاقے سبزی منڈی کے سامنے پیش آیا تفصیل کے مطابق جتوئی شہر کے موضع قیصر غزلانی کے محمد سعید غزلانی نے بتایا کہ میرا سبزی منڈی کے باہر سائیکل سٹینڈ ہے گزشتہ دنوں صبح دس بجے اللہ بخش ولد غلام حیدر غزلانی نے ایک پنچائت سجائی جس میں صابر حسین ،سہرے خاں ،فلک شیر،مرید حسین ،فاروق،ربنواز، حقنواز،پہلوان، غلام یسیٰن ،خالد محمود عرف ببلوخان، زوار حسین،غلام شبیر ،فیاض ولد اور10/15 نامعلو سامنے آنے پر شناخت کرسکتا ہوں مسلح ہائے سوٹے اللہ ڈتی غزلانی کی ٹال پر پنچائت سجائی اللہ بخش سرپنچ نے میرے بوڑھے والد 83 سالہ مہیوال کو پنچائت میں نیچے گھٹنوں کے بھر بیٹھنے کا حکم دیا اور اسے زبردستی نیچے بٹھایا گیااور پنچائت میں اسے سر میں پانچ جوتے مارنے کا حکمصادر کیا گیا اس دوران میرے بوڑھے والد نے تمام پنچائیتیوں کی ہاتھ جوڑ کر منت سماجت بھی کی مگر کسی کوذرا بھی ترس نہ آیا اور بھی پنچائت میں جوتے مارے گئے یہاں یہ امر بھی باعث تحریر ہے کہ جوتے مارنے کے دوران انکے مخالفین گھیرا ڈال کر بھنگڑا ڈالتے رہے جتوئی پولیس کے ایس ایچ او نے سیاسی بنیادوں پر مقدمہ درج کرنے سے جواب دے دیا جس مظلوم خاندان ڈی پی او مظفرگڑھ کے سامنے پیش ہواسماعت کے بعد ڈی پی او مظفرگڑھ نے لیگل ڈی ایس پی مظفرگڑھ سے قانونی رائے طلب کی اور انکی رائے پر مقدمہ درج کرنے کے احکامات دیدئے جتوئی پولیس نے مقدمہ درج کرکے گرفتاری کیلئے چھاپے مارنا شروع کردئے ہیں۔

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...