دنیا کا انوکھا ترین گاﺅں جہاں خواتین کو زندگی میں صرف ایک مرتبہ اپنے بال کاٹنے کی اجازت ملتی ہے کیونکہ۔۔۔

دنیا کا انوکھا ترین گاﺅں جہاں خواتین کو زندگی میں صرف ایک مرتبہ اپنے بال ...
دنیا کا انوکھا ترین گاﺅں جہاں خواتین کو زندگی میں صرف ایک مرتبہ اپنے بال کاٹنے کی اجازت ملتی ہے کیونکہ۔۔۔

  


بیجنگ(مانیٹرنگ ڈیسک) دنیا قدیم تہذیبوں کا گہوارہ ہے مگر اکثر قومیتیں جدت پسندی کی روش پر چل کر اپنی قدیم تہذیب اور رسوم و روایات کو بھلا چکی ہے۔ اب بھی دنیا میں بعض ایسے نسلی گروپ ہے جو اپنی ہزاروں سالہ تہذیب سے جڑے ہوئے ہیں۔ انہی میں سے ایک چین کا ”یاﺅ“ نسلی گروپ ہے جو آج بھی اپنی 2ہزار سالہ روایات کا امین ہے۔برطانوی اخبار ڈیلی میل کی رپورٹ کے مطابق چینی صوبے گوانگ ژی کے قصبے ”ہوانگ لو“ میں 2ہزار سال سے رہائش پذیر اس قبیلے میں ابتداءسے ایک رسم چلی آ رہی ہے کہ اس کی خواتین زندگی میں صرف ایک بار اپنے بال کٹواتی ہیں اور وہ شادی سے قبل کاٹے جاتے ہیں۔ یہی وجہ ہے کہ اس قبیلے کی خواتین کے بال حیران کن حد تک لمبے ہوتے ہیں۔ یہاں شاید ہی کوئی ایسی عورت ہو جس کے بال 3فٹ سے کم لمبے ہوں۔ یہاں ایک خاتون کے بال 7فٹ لمبے ہیں جو اس گاﺅں کی دیگر تمام خواتین میں سب سے زیادہ لمبے ہیں۔

کھدائی کے دوران ماہرین کو ایسی عورت کا ڈھانچہ مل گیا کہ دیکھ کر سائنسدانوں کے پیروں کے نیچے سے زمین نکل گئی

رپورٹ کے مطابق یہ خواتین اپنے بالوں کو انتہائی خوبصورتی اور نفاست کے ساتھ سرپر یوں باندھ لیتی ہیں جیسے پگڑی باندھی گئی ہو۔ سرسری نظر دیکھنے پر ایسے لگتا ہے جیسے انہوں نے کوئی سیاہ رنگ کی خوبصورت ٹوپی پہن رکھی ہے مگر جب غور سے دیکھیں تو معلوم ہوتا ہے کہ دراصل انہوں نے اپنے بالوں کو خوبصورت ڈیزائن دے کر اپنے سرپر لپیٹ رکھا ہے۔ اس قبیلے کی ایک خاص پہچان ان کا مخصوص پہناوا بھی ہے جو سیاہ اور سرخ رنگ کی آمیزش پر مشتمل ہوتا ہے اور اس پر خوبصورت کشیدہ کاری کی گئی ہوتی ہے۔اس قبیلے میں کل 78خاندان ہیں اور ان کے افراد کی مجموعی تعداد 600ہے۔

قبیلے کی 51سالہ خاتون پین ژی فینگ نے بھی زندگی میں ایک بار بال کٹوائے ہیں۔ اس کا کہنا ہے کہ ”بالوں کے حوالے سے نسل درنسل ہمیں ایک اچھی بات سکھائی جاتی ہے۔ ہم بچپن سے ہی بال نہیں کٹواتیں، جب ہماری عمر 18سال ہوتی ہے تو زندگی میں پہلی بار ہمارے بال کاٹے جاتے ہیں۔ یہ اس بات کا اعلان ہوتا ہے کہ اب لڑکی بالغ ہو گئی ہے اور وہ شادی کر سکتی ہے۔کوئی لڑکی جب اٹھارہ سال کی ہوتی ہے تو اس کی بال کٹوائی کے لیے ایک تقریب کا اہتمام کیا جاتا ہے جس میں پورے قصبے کے لوگ شرکت کرتے ہیں۔یہ کٹے ہوئے بال سنبھال کر رکھ لیے جاتے ہیں اور جب اس لڑکی کی شادی ہوتی ہے تو وہ یہ کٹے ہوئے بال اپنے سر پر موجود بالوں کو باندھنے کے لیے بطور کلپ استعمال کرتی ہے۔ یہاں کٹے ہوئے بال ہی لڑکی کے شادی شدہ ہونے کی علامت ہوتے ہیں۔“

یاد رہے کہ دنیا میں سب سے زیادہ لمبے بال رکھنے کا اعزاز بھی ایک چینی خاتون کے پاس ہے جو ژی کیوپنگ (Xie Qiuping)کی رہائشی ہے۔ اس کا نام گنیز بک آف ورلڈ ریکارڈ میں شامل ہے۔ مئی 2004ءمیں اس کے بالوں کی لمبائی 18فٹ 5.54انچ تھی۔

مزید : ڈیلی بائیٹس


loading...