کیا یہ نئی امریکی سازش ہے؟ چین کو بڑا جھٹکا لگ گیا، ملک میں ایک ایسا کام شروع ہوگیا کہ پہلے کبھی اس مسئلے پر سوچا بھی نہ ہوگا

کیا یہ نئی امریکی سازش ہے؟ چین کو بڑا جھٹکا لگ گیا، ملک میں ایک ایسا کام شروع ...
کیا یہ نئی امریکی سازش ہے؟ چین کو بڑا جھٹکا لگ گیا، ملک میں ایک ایسا کام شروع ہوگیا کہ پہلے کبھی اس مسئلے پر سوچا بھی نہ ہوگا

  


بیجنگ(مانیٹرنگ ڈیسک)امریکہ علیحدگی پسندی کی تحریکوں کو ہوا دے کر اور شدت پسندوں کو ہر طرح کا تعاون فراہم کرکے اب تک کئی ممالک کا بیڑہ غرق کر چکا ہے جن میں عراق، شام، لیبیا و دیگر کئی ملک شامل ہیں۔طویل عرصے سے امریکہ چین میں بھی علیحدگی پسندی کی آبیاری میں لگا ہوا تھا اور اب اسے اس سازش میں پہلی اور تاریخی کامیابی مل گئی ہے۔ ہانگ کانگ میں تاریخ میں پہلی بار علیحدگی پسندوں نے چین سے آزادی کے حق میں ایک ریلی نکال دی ہے۔ اس ریلی سے محض 12دن قبل ہانگ کانگ میں ایک سروے کیا گیا جس میں ہر 6میں سے ایک شہری نے چین سے آزادی حاصل کرنے کی حمایت کی۔

وہ ہتھیار جسے بھارت نے 200 ارب روپے خرچ کرکے خریدا، ’ناکارہ‘ نکلا، بھارتی فوج کیلئے بڑی شرمندگی کا باعث بن گیا

ٹائم ڈاٹ کام کی رپورٹ کے مطابق یہ ریلی ہانگ کانگ نیشنل پارٹی کی کال پر شہر کے مرکزی گورنمنٹ کمپلیکس کے پاس نکالی گئی۔حکومت کی طرف سے آزادی کی تحریک چلانے والے 6افراد پر ستمبر میں ہونے والے انتخابات میں حصہ لینے پر پابندی لگا دی تھی جس کو جواز بناتے ہوئے نیشنل پارٹی نے اس ریلی کا اہتمام کر ڈالا۔اس موقع پر پولیس کی بھاری نفری بھی وہاں تعینات رہی تاہم کوئی ناخوشگوار واقعہ پیش نہیں آیا۔ ریلی سے خطاب کرتے ہوئے علیحدگی پسند رہنماءایڈورڈ لیونگ کا کہنا تھا کہ ”ہانگ کانگ کی خودمختاری شی جن پنگ، ان کی کمیونسٹ پارٹی اور چینی یا مقامی حکومت سے وابستہ نہیں ہے۔ ہانگ کانگ کی خودمختاری ہم سے وابستہ ہے۔“ واضح رہے کہ گزشتہ دنوں چین کی طرف سے امریکہ کی یہ سازش بے نقاب کی جا چکی ہے۔ چین کی طرف سے جاری ایک بیان میں کہا گیا تھا کہ امریکہ ہانگ کانگ میں علیحدگی پسندوں کو ہر طرح کا تعاون فراہم کر رہا ہے اور چین کو شام اور عراق بنانے پر تلا ہے۔

مزید : بین الاقوامی


loading...