چین کا امریکی مصنوعات پر 5سے 25فیصد تک اضافی ٹیکس کا اعلان

چین کا امریکی مصنوعات پر 5سے 25فیصد تک اضافی ٹیکس کا اعلان

بیجنگ (آئی این پی ) چین نے 60 ارب ڈالرزمالیت کی مختلف امریکی مصنوعات پر پچیس ، بیس ، دس اور پانچ فیصد اضافی محصولات عائد کرنے کا اعلان کرتے ہوئے کہا ہے کہ اگر امریکی حکومت اپنے فیصلے پر عمل در آمد کرتی ہے تو چین فوری طور پر مذکورہ جوابی اقدامات اختیار کرے گا ،ہم نے اپنے رویے میں تحمل کے ساتھ اضافی محصولات کی مختلف شرح بنائی ہے۔ چائنہ ریڈیو انٹرنیشنل کے مطابق امریکہ نے حال ہی میں دو کھرب امریکی ڈالرز مالیت کی چینی مصنوعات پر اضافی محصولات کی شرح دس فیصد سے بڑھ کر پچیس فیصد تک لے جانے کا اعلان کیا ہے ۔ امریکہ کے ان اقدامات کے جواب میں چینی ریاستی کونسل کی محصولات کے اصولوں کی کمیٹِی نے ساٹھ ارب ڈالرزمالیت کی مختلف امریکی مصنوعات پر پچیس ، بیس ، دس اور پانچ فیصد اضافی محصولات عائد کرنے کا اعلان کیا ہے۔ اگر امریکی حکومت اپنے اس فیصلے پر عمل در آمد کرتی ہے تو چین فوری طور پر مذکورہ جوابی اقدامات اختیار کرے گا ۔اس کے ساتھ چین کی وزارت تجارت کے ترجمان نے کہا کہ چین نے اپنے رویے میں تحمل کے ساتھ اضافی محصولات کی مختلف شرح بنائی ہے۔ انہوں نے کہا کہ امریکہ کے عمل کے مطابق مزید اقدامات اختیار کرنے کابھی فیصلہ کیا جائے گا ۔ امریکہ نے بارہا تجارتی کشمکش میں اضافہ کیا جس سے چین اور چینی عوام کے مفادات کو نقصان پہنچے گا ۔ اسی تناظر میں چین کو بیرونی تجارت کے قانون ، برآمدات و درآمدات کے لیے محصولات کے قوانین و ضوابط اور بین الاقوامی قانون کے مطابق مجبورا جوابی اقدامات اختیار کرنے پڑے ۔ چین کی طرف سے ایسے اقدامات کا مقصد تجارتی جنگ کو روکنے کے ساتھ ساتھ آزاد تجارت ، کثیرالطرفہ نظام اور دنیا کے مختلف ممالک کے مشترکہ مفادات کا تحفظ کرنا ہے ۔ امریکی حکومت نے اپنے عوام اور صنعتی و کاروباری اداروں کے مفادات کو نظر انداز کرتے ہوئے تجارتی کشمکش کو بڑھانے کی کوشش کی تاہم چین نے اپنے عوام اور اداروں کے مفادات پر کم سے کم منفی اثرات مرتب ہونے کیلئے اپنے رویے میں تحمل کا مظاہرہ کرتے ہوئے باہمی احترام ، مساوات اور باہمی فواعد کی بنیاد پر تجارتی تنازعات کے حل کے لئے مشاورت کرنے کی بھر پور کوشش کی ہے۔

مزید : عالمی منظر