مریم اورنگزیب ، عائشہ ، شیریں ، عندلیب، منزہ ، حنا ، کشور زہرہ سمیت درجنوں خواتین قومی اسمبلی پہنچ جائینگی

مریم اورنگزیب ، عائشہ ، شیریں ، عندلیب، منزہ ، حنا ، کشور زہرہ سمیت درجنوں ...

لاہور(لیڈی رپورٹر) عام انتخابات کے بعد قومی اسمبلی میں خواتین کی مخصوص نشستوں پر بڑے بڑے سیاسی ناموں کے اسمبلی میں پہنچنے کا امکان ہے۔ قومی اسمبلی میں خواتین کیلئے مختص 60نشستوں میں سب سے زیادہ تحریک انصاف ،دوسرے نمبر پر مسلم لیگ (ن) اور تیسرے نمبر پر پیپلز پارٹی سے تعلق رکھنے والی خواتین منتخب ہونگی ،تحریک انصاف کی جانب سے شیریں مزاری،عندلیب عباس ، منزہ حسن ،مسلم لیگ (ن) کی جانب سے سابق وزیر اطلاعات مریم اورنگزیب ان کی والدہ طاہر ہ اورنگزیب ،شائستہ پرویز ،زہرہ ودود فاطمی اور پیپلز پارٹی کی جانب سے سابق وزیر خارجہ حنا ربانی کھر،شگفتہ جمانی،مسرت رفیق اور ایم کیوایم کی جانب سے کشور زہرہ کا ممبر قومی اسمبلی بننے کے امکانات ہیں ۔ عام انتخابات 2018 ء کے بعد اب مخصوص نشستوں پر خواتین ارکان منتخب ہونے کا مرحلہ ہے اور خواتین کی نشستوں پر سیاسی جماعتوں کے بڑے بڑے نام رکن قومی اسمبلی بنیں گے۔ ذرائع الیکشن کمیشن کے مطابق تحریک انصاف کی شیریں مزاری، عندلیب عباس ،منزہ حسن،عاصمہ قدیر، عالیہ حمزہ، جویریہ ظفر، کنول شوذب، سیمی بخاری، ثوبیہ کمال، نوشین حمید، روبینہ جمیل، ملائیکہ بخاری اور فوزیہ بہرام ،رخسانہ نوید، تاشفین صفدر، وجیہہ اکرم، صائمہ ندیم، غزالہ سعید، نزہت پٹھان اور نصرت وحیدکے رکن قومی اسمبلی بننے کا امکان ہے۔مسلم لیگ (ن) کے متوقع ناموں کے حوالے سے ذرائع کا کہنا ہے کہ طاہرہ اورنگزیب، شائستہ پرویز، عائشہ رجب بلوچ، مریم اورنگزیب، شزا فاطمہ، عائشہ غوث پاشا، زہرہ ودود فاطمی، کرن ڈار، خورشید عالم، مسرت آصف ،ثمینہ مطلوب، شہباز سلیم ،سیماجیلانی اور زیب جعفر کامسلم لیگ (ن) کی جانب سے ممبر قومی اسمبلی بننے کا امکان ہے۔پیپلز پارٹی کی متوقع امیدواروں میں حناربانی کھر ،شگفتہ جمانی، مسرت رفیق ،ناز بلوچ ،شاہدہ رحمانی، مہرین بھٹو، شازیہ صوبیہ اور یاسمین شاہ شامل ہیں ۔ ایم کیوایم کی کشورزہرا اور مسلم لیگ(ق) کی فرخ خان مخصوص نشست پر ممبر قومی اسمبلی بننے کا امکان ہے۔اقلیتی امیدوارذرائع کے مطابق اقلیتوں کی مخصوص نشستوں پر پیپلزپارٹی کے رمیش لال، نوید عامرجیوا جب کہ تحریک انصاف کے لال چند اور شہنیلا رتھ کے ممبر قومی اسمبلی بننے کا امکان ہے۔

خواتین کی مخصوص نشستیں

مزید : صفحہ اول