بھارتی فوج کی فائرنگ سے1اورکشمیری شہید، وادی میں ہڑتال جاری، مظاہرے روکنے کیلئے بھارتی فورسز تعینات

بھارتی فوج کی فائرنگ سے1اورکشمیری شہید، وادی میں ہڑتال جاری، مظاہرے روکنے ...

سری نگر ( نیوزایجنسیاں،مانیٹرنگ ڈیسک )بھارتی فوج کی فائرنگ سے ایک اور کشمیری شہید، چند روز میں شہدا کی تعداد 12 ہوگئی،مقبوضہ کشمیر :دفعہ 35-Aکو منسوخ کرنے کے مذموم بھارتی منصوبے کیخلاف 2روزہ ہڑتال شروع ،بھارت مخالف مظاہرے روکنے کیلئے سرینگر اور دیگر قصبوں میں بڑی تعداد میں فورسز اہلکار تعینات۔تفصیلات کے مطابقمقبوضہ کشمیر میں قابض بھارتی فوج نے نہتے شہریوں پر فائرنگ کردی جس کے نتیجے میں ایک کشمیری شہید اور ایک زخمی ہوگیا۔ تازہ واقعے میں بھارتی دستے راشٹاریہ رائفل 58 نے گزشتہ شب ضلع رامبن کی تحصیل گول میں مقامی آبادی پر فائرنگ کی جس سے ایک کشمیری شہید ہوگیا۔شہید نوجوان کی شناخت محمد شفیع گجر کے نام سے ہوئی ہے۔ زخمی نوجوان شکیل احمد کو قریبی اسپتال منتقل کردیا گیا جہاں اس کی حالت نازک بتائی جا رہی ہے۔حریت رہنماؤں نے نوجوانوں کی شہادت پر آج وادی میں مکمل شٹر ڈاؤن ہڑتال کا اعلان کیا ہے۔علاوہ ازیں بھارتی حکومت کی طرف سے آئین کی دفعہ 35-Aکو منسوخ کرنے کے مذموم منصوبے کے خلا ف آج سے مقبوضہ کشمیر میں دوروزہ ہڑتا ل کی جا رہی ہے۔ ہڑتال کی وجہ سے مقبوضہ وادی میں نظام زندگی مفلوج ہے۔کشمیر میڈیاسروس کے مطابق بھارتی آئین کی دفعہ 35-Aکے تحت کشمیر کے مستقل باشندوں کو خصوصی مراعات حاصل ہیں اور اس دفعہ کی وجہ سے ہی غیر کشمیریوں کو مقبوضہ علاقے میں زمین اور دیگر جائیداد خریدنے کی اجازت نہیں ہے۔ہڑتال کی کال سید علی گیلانی ، میرواعظ عمرفاروق اور محمد یاسین ملک پر مشتمل مشترکہ حریت قیادت نے دی ہے جبکہ تاجر اور سول سوسائٹی کی تنظیموں نے اس کی حمایت کی ہے۔ ہڑتال کا مقصد بھارتی سپریم کورٹ میں دفعہ 35-A کی منسوخی کے حوالے سے دائر عرضداشت پر کل پیرکے روز ہونے والی سماعت کے خلاف احتجاج کرنا ہے۔دکانیں، کاروباری مراکز، نجی و سرکاری دفاتر بند ہیں جبکہ سڑکوں پر ٹریفک کی آمد و رفت معطل ہے ۔ قابض انتظامیہ نے بھارت مخالف مظاہروں کو روکنے کیلئے سرینگراور دیگر تمام بڑے قصبوں میں بڑی تعداد میں بھارتی فوجی اور پولیس اہلکار تعینات کر دیے ہیں۔ انتظامیہ نے مقبوضہ وادی میں ریل سروس بھی معطل کر دی ہے۔بھارتی پولیس نے محمد یاسین ملک کی گرفتار ی کے لیے سرینگر میں انکے گھر پر چھاپہ مارا تاہم وہ گھر پر موجود نہیں تھے۔ انتظامیہ نے بلال احمد صدیقی، انجینئر ہلال احمد وار اور ظفر اکبر بٹ کو گھرو ں میں نظر بند کر دیا ہے۔ کل جماعتی حریت کانفرنس کے چیئرمین سید علی گیلانی پہلے سے سرینگر میں گھر میں نظر بند ہیں ۔

کشمیری شہید،ہڑتال

مزید : صفحہ آخر