پاکستان میں ایک کنٹرول جمہوریت متعارف کرائی جارہی ہے، سینیٹر سراج الحق

پاکستان میں ایک کنٹرول جمہوریت متعارف کرائی جارہی ہے، سینیٹر سراج الحق

کراچی (اسٹاف رپورٹر ) امیرجماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے کہا ہے کہ پاکستان میں ایک کنٹرول جمہوریت متعارف کرائی جارہی ہے، کل کاقراردیاجانے والا مافیا اورڈاکو اگلی حکومت میں نئے پاکستان کے علمبردارہوں گے،دھاندلی سے قائم کردہ حکومت زیادہ دیرتک نہیں چل پائے گی،دینی قوتیں بہت جلدحکومت بنائیں گی۔ان خیالات کا اظہارانہوں نے قباء آڈیٹوریم میں منعقدہ جماعت اسلامی سندھ کی مجلس شوریٰ سے خطاب کے دوران کیا۔ اس موقع پر مرکزی جنرل سیکریٹری لیاقت بلوچ ،ڈپٹی جنرل سیکریٹری محمد اصغر، صوبائی امیر ڈاکٹر معراج الہدیٰ صدیقی اور جنرل سیکریٹری ممتاز حسین سہتو نے بھی خطاب کیا، جبکہ صوبائی نائب امراء، نائب قیمین اور سندھ بھر سے ضلعی امراء وجنرل سیکریٹری شریک تھے۔اجلاس صبح دس بجے سے رات گئے تک جاری رہا۔قبل ازیں صوبائی امیر نے سراج الحق ودیگر مہمانوں کو سندھ کا روایتی تحفہ اجرک پیش کیا۔مرکزی امیر سینٹر سراج الحق نے لیاری کراچی سے منتخب رکن سندھ اسمبلی سید عبدالرشید کو مبارکباد اور اجرک کا تحفہ پیش کیا۔ اجلاس میں ملکی سیاسی صورتحال سمیت انتخابات کا جائزہ اور آئندہ کی منصوبہ بندی بھی کی گئی۔ سراج الحق نے مزید کہا کہ ایک دینی ونظریاتی کارکن کے لیے پیمانہ کامیابی وناکامی نہیں بلکہ رب کی رضا ہے،مصر سے لیکرپاکستان تک جولوگ اسلام کومحض چندعبادات کی بجائے نظام حیات طورپرپیش کرتے ہیں توپھرکچھ قوتیں اپنا کام دکھاتیں ہیں کیونکہ خلائی مخلوق کوکنٹرول ڈیموکریسی چاہئے،انہوں نے کہا کہ کرپشن کیخلاف اور اسلامی پاکستان وخوشحال پاکستان کیلئے اپنی جدوجہد جاری رکھیں گے، 11اور12اگست کو منصورہ لاہور میں مرکزی مجلس شوریٰ کا اجلاس ہوگا جس میں مزید انتخابی جائزے سمیت مستقبل کا نقشہ بنائیں گے۔ لیاقت بلوچ نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پارلیمنٹ نے الیکشن کمیشن کو بااختیار بنایا مگر الیکشن کمیشن اپنے اختیارات کا تحفظ کرنے میں ناکام رہا، بہتر انتظامات کرنے کے باوجود نتائج کے وقت آپریشن ’’ردوبدل‘‘ نے سب پر پانی پھیر دیا، پارلیمنٹ میں نمائندہ سیاسی جماعتیں انتخابات میں بدترین دھاندلی پر تحفظات رکھتی ہیں جس کیخلاف آٹھ اگست کو مرکزی وصوبائی الیکشن کمیشن کے آفس کے باہر احتجاجی مظاہرے اور وائٹ پیپر شایع کئے جائیں گے۔جماعت اسلامی ایم ایم اے کا حصہ ہے، ہم اپنی تنظیم کو ضلع ومقام کی سطح پر منظم اور کارکنوں کو متحرک کریں گے، حالیہ انتخابات میں دینی قوتوں نے ملک بھر سے 55لاکھ ووٹ حاصل کئے ہیں۔ صوبائی امیر ڈاکٹر معراج الہدیٰ صدیقی نے کہا کہ جماعت اسلامی ایک نظریاتی ودعوتی جماعت ہے ،انتخابات میں فتح وشکست ہمارے لئے کوئی اہمیت نہیں رکھتی، جماعت اسلامی دعوت ،خدمت وتربیت، اصلاح معاشرہ اور رابطہ عوام مہم جاری رکھے گی۔آج انتخابات کو دھن ،دھونس اور دھاندلی کا کھیل بنادیا گیا ہے، تطہیرافکاراورتعمیر سیرت کا م جاری رہے گا۔

مزید : صفحہ آخر