بھارتی ریاست اترپردیش میں 138سالہ تاریخی ’’ مغل سرائے جنکشن ‘‘ کا نام تبدیل

بھارتی ریاست اترپردیش میں 138سالہ تاریخی ’’ مغل سرائے جنکشن ‘‘ کا نام تبدیل
بھارتی ریاست اترپردیش میں 138سالہ تاریخی ’’ مغل سرائے جنکشن ‘‘ کا نام تبدیل

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

نئی دہلی(این این آئی)مغل سرائے ریلوے اسٹیشن کی تاریخ کا سورج138سال بعد غروب ہوگیا۔اتر پردیش کے ضلع چندولی میں واقع مغل سرائے سٹیشن کو مغلوں کی علامت سمجھے جانے والے مغل سرائے جنکشن کا نام تبدیل کرکے مرکزی حکومت نے اس کانیا نام پنڈت دین دیال اپادھیائے رکھ دیا ہے۔

بھارتی ٹی وی کے مطابق مغل سرائے جنکشن کے نئے نام کی نقاب کشائی کیلئے باقاعدہ تقریب کا انعقاد کیا گیا جس میں وزیر ریل پیوش گوئل ، وزیر اعلیٰ یوگی آدتیہ ناتھ ، بھارتیہ جنتا پارٹی کے صدر امیت شاہ سمیت متعدد وزراء اور چندولی کے رکن پارٹی کے ضلع صدر ڈاکٹر مہند ناتھ پانڈینے بھی شرکت کی۔واس جنکشن سے روزانہ ملک کے مختلف گوشوں میں 200سے زائد ٹرینوں کی آمدورفت ہوتی ہے۔

رپورٹ کے مطابق تاریخ پر نظر ڈالیں تو 1862ء میں ایسٹ انڈیا کمپنی کی جانب سے دہلی سے ہاوڑا تک ریلوے لائن بچھانے کا منصوبہ عمل میں آیا۔ اسی دوران 1880ء میں مغل سرائے ریلوے سٹیشن کی عمارت تعمیر کی گئی بعد ازاں مغل سرائے کے نام سے معروف ہوگیا ۔ یہ سٹیشن اب مخصوص فرقہ کی نظر ہوکر ’’پنڈت دین دیال اپادھیائے ‘‘کے نام سے جانا جائے گا۔

مزید : بین الاقوامی