چین نے نیا سپر کمپیوٹر پروٹوٹائپ ’’ سن وے ‘‘ لانچ کردیا

چین نے نیا سپر کمپیوٹر پروٹوٹائپ ’’ سن وے ‘‘ لانچ کردیا
چین نے نیا سپر کمپیوٹر پروٹوٹائپ ’’ سن وے ‘‘ لانچ کردیا

  

بیجنگ(این این آئی)چین نے نیا سپر کمپیوٹر پروٹوٹائپ سن وے لانچ کردیا، جو سائنسی ریسرچ اور میڈیکل کی فیلڈ میں مددگار ثابت ہوگا۔

چینی خبر رساں ایجنسی کے مطابق سن وے ایگزا اسکیل کمپیوٹر پروٹو ٹائپ کو نیشنل ریسرچ سینیٹر آف پیرالل کمپیوٹر انجینئرنگ اینڈ ٹیکنالوجی (این آر سی پی سی)، نیشنل سپر کمپیوٹنگ سینٹر اور پائلٹ نیشنل لیبارٹری فار میرین سائنس اینڈ ٹیکنالوجی نے مشترکہ طور پر بنایا۔ایک ایگزا اسکیل کمپیوٹر یعنی 10 لاکھ کی5گنی طاقت (ایک ہزار کی چھٹی طاقت) فی سیکنڈ کے حساب سے کیلکولیشنز کرسکتا ہے۔واضح رہے کہ گزشتہ ماہ 22 جولائی کو بھی ایک ایگزا اسکیل سپر کمپیوٹر ٹیان ہے۔3 کا آزمائشی ٹیسٹ کیا گیا تھا، جس کا فائنل ورڑن 2020 تک سامنے آنے کی امید ہے۔یہ دونوں پروٹوٹائپ چین کے نیکسٹ جنریشن سپرکمپیوٹر کی تیاری میں ایک اہم قدم ثابت ہوں گے۔

رپورٹ کے مطابق سپر کمپیوٹرز موسم کی پیشگوئی، سمندری معلومات، فنانشل ڈیٹا اینالسز اور دیگر اہم شعبوں میں اہم خدمات سرانجام دیتے ہیں۔چینی صوبے شانڈونگ کے مشرقی شہر جینان میں واقع نیشنل سپر کمپیوٹنگ سینٹرنیا سپر کمپیوٹر کے ڈائریکٹر ڑانگ یونکوان کے مطابق 'نئے سپرکمپیوٹر کی مدد سے میڈیسن کے شعبے میں ریسرچ اور ڈیولپمنٹ کا عمل کئی سالوں کے مقابلے میں چند ہفتوں پر محیط ہوجائے گا جبکہ اس سے تحقیق کے میدان میں اٹھنے والے اخراجات اور دواؤں کی قیمتوں میں کمی کے سلسلے میں بھی مدد ملے گی۔

مزید : بین الاقوامی /سائنس اور ٹیکنالوجی