جہانگیر ترین سمیت 3بڑے شوگر مل گروپس کیخلاف کریک ڈاؤن شروع

جہانگیر ترین سمیت 3بڑے شوگر مل گروپس کیخلاف کریک ڈاؤن شروع

  

 اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) وفاقی تحقیقاتی ادارے (ایف آئی اے) نے تین بڑے شوگر مل گروپس کیخلاف کریک ڈاؤن شروع کرد یا۔ا س حوالے سے 20 ارب روپے کے ما لی جرم کی تفتیش کیلئے جے ڈی ڈبلیو، آر وائی کے اور العربیہ کو نوٹسز دیدیئے گئے۔ وفاقی حکومت نے 20 ارب روپے سے زائد کے مبینہ مالی جرم میں ملوث ملک میں شوگر ملز چلانے وا لے تین بڑے گروپس کیخلاف تحقیقات کیلئے ایک اعلیٰ ا ختیا راتی مشترکا تحقیقاتی ٹیم (سی آئی ٹی) تشکیل دی ہے۔ایف آئی اے کے سربراہ واجد ضیاء کی جانب سے تشکیل دی گئی سی آئی ٹی نے پی ٹی آئی رہنماء جہانگیر ترین کی ملکیت جے ڈی ڈبلیو گروپ آف کمپنیز، آر وائی کے گروپ کی ملکیت الائنس شوگر ملز، جس میں وفاقی وزیر اقتصا د ی امور مخدوم خسرو بختیار کے خاندان کا بڑا حصہ ہے اور مسلم لیگ ق کے رہنماء چوہدری مونس الٰہی کیخلاف قانونی کارروائی کا آغاز کردیا ہے۔سرکاری دستاویزات میں انکشاف ہوا ہے کہ یہ کارروائی وفاقی کابینہ کے 23 جون کے فیصلے کی روشنی میں سامنے آرہی ہے جو شوگر انکوائری کمیشن کی سفارشات کی روشنی میں سامنے آیا۔ڈائریکٹر ایف آئی اے ڈاکٹر رضوان کی سربراہی میں سی آ ئی ٹی کو جے ڈی ڈبلیو گروپ کے مبینہ بے نامی کاروبار، مالی جرم وغیرہ، جس میں 16.1 ارب روپے سے زائد کی رقم شامل ہے، کیخلاف تفتیش شروع کرنے کا اختیار شوگر کمیشن کی سفا رشات کی روشنی میں دیا گیا ہے۔

کریک ڈاؤن

 اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) قومی احتساب بیورو کے چیئرمین جسٹس جاوید اقبال کے زیر صدارت اجلاس میں شوگر سبسڈی کی غیر جانبدرانہ اور شفاف تحقیقات کیلئے مشترکہ تحقیقاتی ٹیم بنانے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ترجمان نیب کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ ٹیم نیب راولپنڈی کے تجربہ کار اور محنتی افسران پر مشتمل ہوگی۔ ٹیم میں دو انوسٹی گیشن افسران، فنانشل ایکسپرٹ اور لیگل کونسل ایکسپرٹ شامل ہوں گے۔نیب ٹیم میں شوگر انڈسٹری کے معاملات کا تجربہ رکھنے والے ایکسپرٹ، فرانزک ایکسپرٹ، کیس افسر، ایڈیشنل ڈائریکٹر اور متعلقہ ڈائریکٹر بھی شامل ہوں گے۔تحقیقات کی نگرانی ڈی جی نیب راولپنڈی عرفان نعیم منگی کریں گے۔ نیب چیئرمین، ڈپٹی چیئرمین، پراسیکیوٹر جنرل اکاؤنٹبلیٹی اور ڈی جی آپریشنز ہر ماہ رپورٹ کا جائزہ لیں گے۔مشترکہ تحقیقاتی ٹیم شفاف تحقیقات کیلئے تمام صوبوں سے چینی سبسڈی سے متعلق مکمل تفصیلات لے سکے گی۔ 

نیب جے آئی ٹی

مزید :

صفحہ اول -