کرونا وائرس کا حملہ، ڈاکٹر مزمل عباس جاں بحق، نشتر میں 13مریضوں کی حالت تشویشناک 

      کرونا وائرس کا حملہ، ڈاکٹر مزمل عباس جاں بحق، نشتر میں 13مریضوں کی حالت ...

  

  ملتان (وقا ئع نگار) کورونا وائرس کے سبب نشتر ہسپتال ملتان  کے ایک اور ڈاکٹر جان کی بازی ہار گئے ہیں۔ڈاکٹر مزمل عباس 

(بقیہ نمبر34صفحہ6پر)

نیوروسرجری میں پوسٹ گریجوایشن کر رہے تھے۔اور وارڈ نمبر 14 میں خدمات انجام دے رہے تھے۔چند روز قبل حالت تشویشناک ہونے پر انہیں وینٹی لیٹر پر منتقل کیا گیا تھا وہ انڈس ہسپتال مظفرگڑھ کے آئی سی یو وارڈ میں زیر علاج تھے۔جو بدھ کو خالق حقیقی سے جا ملے۔پاکستان میڈیکل ایسوسی ایشن(پی ایم اے)ملتان کے صدر پروفیسر ڈاکٹر مسعود الروف ہراج،جنرل سیکرٹری ڈاکٹر رانا خاور،ڈاکٹر شیخ عبدالخالق،ڈاکٹر ذوالقرنین حیدر،ڈاکٹر وقار نیازی و دیگر نے حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ ڈاکٹر مزمل عباس پی جی آر نشتر ہسپتال ملتان کو سرکاری سطح پر شہید کا درجہ دیا جائے اور ڈیوٹی کے دوران کرونا کی وجہ سے شہید ہونے پر اعلی سرکاری اعزاز سے نوازا جائے۔کورونا وائرس کے 13 مریضوں کی حالت تشویشناک ہے۔9 مریض وینٹی لیٹر پر ہیں۔نشتر ہسپتال کے کورونا وائرس آئسولیشن وارڈ میں داخل 27 مریضوں میں سے 12 مریض کورونا پازیٹو ہیں۔اب تک نشتر ہسپتال میں کورونا وائرس کے شبہ میں لائے گئے 1666 مریضوں میں سے 592 مریضوں میں کورونا وائرس کی تصدیق ہوچکی ہے۔کورونا وائرس کے 162 مریض فوت ہوچکے ہیں۔کورونا وائرس کے 375 مریض صحت یاب ہوچکے ہیں۔39 ڈاکٹروں،15 نرسوں اور 6 پیرا میڈیکل سٹاف میں کورونا وائرس کی تصدیق ہوچکی ہے۔ایک لیڈی ڈاکٹر غزالہ شاہین فوت ہوچکی ہے۔نشتر ہسپتال میں 20 ہزار 707 افراد کے کورونا وائرس ٹسٹ کئے جاچکے ہیں۔2846 مریضوں میں کورونا وائرس کی تصدیق ہوئی ہے۔

نشترڈاک

مزید :

ملتان صفحہ آخر -