راجن پور: ارکان اسمبلی کادباؤ،17کلرکوں کے تبادلے منسوخ

راجن پور: ارکان اسمبلی کادباؤ،17کلرکوں کے تبادلے منسوخ

  

جام پور  (نامہ نگار)  راجن پور میں محکمہ تعلیم میں جونیئر کلرکوں کے تبادلہ پر ارکان اسمبلی ڈٹ گئے۔ دو دن قبل کیے گئے سترہ  کلرکوں کے تبادلے منسوخ ہو گئے ۔ ضلع انتظامیہ(بقیہ نمبر41صفحہ6پر)

 نے فوری طور حکومت کی روش پر چلتے ہوئے یو۔ ٹرن لے لیا۔ تیس سالوں سے    ایک ہی سیٹ پر کلرک کام کر رہے تھے۔ تبادلوں کی منسوخی پر سیاسی وسماجی حلقے   سراپا احتجاج بن گئے۔تفصیل کے مطابق سپریم کورٹ کی ہدایت کی روشنی میں ایک ہی سیٹ پر تیس سالوں سے تعنیات جونیئر کلرکوں کے چیف ایگزیکٹو افسر تعلیم راجن پور ثناء اللہ سہرانی نے چاند رات مورخہ تیس جولائی کو تبادلے کرتے ہوئے پانچ اگست تک جائے تعناتی پر حاضر ہونے کا حکم دے دیا ہے۔ کئی دہائیوں سے سیٹوں پر قابض کلرکوں  نے تبادلوں کی خبر سنتے ہی سیاستدانوں کے ڈیروں پر جاکرکے وفاداریاں یاد دلانے لگے۔ علاوہ ازیں اپیکاء راجن پور نے ڈپٹی کمشنر راجن پور کو درخواست بھی گزاری۔ ڈپٹی کمشنر راجن پور نے سی ای او تعلیم کودفتر بلا کرکے ارڈر منسوخ کرنے کا حکم جاری کر دیا ہے۔ تحصیل صد ر اپیکاء اعجاز حسین چانڈیہ۔ ریاض حسین ملغانی۔ انتظار حسین چوہدری۔ قاضی فرخ۔ اعظم خان۔ عامر سعید گشکوری۔ قاضی وسیم۔ وسیم بھٹہ۔ فیاض خان۔ نصر اللہ بھٹی۔ ناصر خان ۔دلشاد شاہ ۔ آصف رسول مکول ۔ عامرطفیل سمیت سترہ کلرکوں کے تبادلے منسوخ کرکے ان کی اپنی سابقہ سیٹوں پر کام کرنے کا حکم جاری کیا گیا ہے۔ دوسری طرف کئی سالوں سے کیے گئے تبادلوں کی منسوخی پر سماجی سیاسی اور شہری حلقوں نے شدید احتجاج کرتے ہوئے کہا کہ حکومت کی کہیں رٹ نظر نہیں اتی ہے۔ ہر کام پر ضلع انتظامیہ اور حکمران یو۔ ٹرن لیتے ہیں۔ تبادلوں کی منسوخی سے حکومت کی رٹ ختم ہو گئی۔ اور کلرک مافیاء جیت گیا ہے۔ شہری وسماجی حلقوں نے چیف جسٹس سے ازخود نوٹس لے کرکے رٹ بحال کرانے کا مطالبہ کیا ہے۔ سی ای او تعلیم سے رابطہ کیا گیا لیکن جواب موصول نہ ہوا۔

منسوخ

مزید :

ملتان صفحہ آخر -