یوم استحصال کشمیر پراسلامیہ یونیورسٹی بہاولپور میں آن لائن سیمینار

        یوم استحصال کشمیر پراسلامیہ یونیورسٹی بہاولپور میں آن لائن سیمینار

  

بہاولپور(ڈسٹرکٹ رپورٹر) پوری قوم اور پاکستان کشمیریوں کے ساتھ سیسہ پلائی دیوار کی طرح کھڑے ہیں ہم ہر قیمت پر آزادی کشمیر کی جدو جہد کامیاب کرا کے دم لیں گے عالمی اداروں کو اقوام متحدہ کی قرارداد پر عملدرآمد کیلئے اپنی طاقت استعمال کرنی ہو گی ورنہ وہ یکسر بے اعتبار ہو کر رہ جائیں گے۔ شاعر و دانشور سید تابش الوری تمغہ امتیاز نے یوم استحصا ل (بقیہ نمبر17صفحہ6پر)

کشمیر کے موقع پراسلامیہ یونیورسٹی بہاولپور کے آن لائن قومی سیمینار میں اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ کشمیر عالمی سطح کا ایک سلگتا ہوا سنگین مسئلہ ہے جس پر پاک و ہند کے درمیان تین جنگیں ہو چکی ہیں گذشتہ سال بھارت نے کشمیر کی خصوصی حیثیت بدل کر اسے بھارت میں ضم کرنے کا جو آمرانہ اقدام کیا ہے اسنے صورت حال کو مزید اشتعال انگیز بنا دیا ہے پورا کشمیر فوجی کر فیو کی سی حالت میں ہے پوری وادی کو ایک وسیع عقوبت خانہ بنا کر کشمیریوں کی زندگی جہنم بنادی گئی ہے ان کے کاروبار بند بازار بند ہسپتال بند سکول بند یہاں تک کہ مساجد بند ہیں ساری دنیا سے رابطے منقطع ہو نے کے بعد کشمیری عوام قید و بند کی زندگی گزار رہے ہیں ہم انھیں سلام کرتے ہیں کہ نو لاکھ فوج کے محاصرے  اور ظلم و ستم کے باوجود وہ بڑی بے جگری اور بہادری سے تاریخ کی  ایک طویل ترین جد و جہد آزادی اپنے زور بازو سے جاری رکھے ہوئے ہیں ابتک ایک لاکھ سے زائد شہادتیں ہو چکی ہیں ہزاروں خواتین بیوائیں اور بچے یتیم کردئیے گئے ہیں اور سینکڑوں لوگ محتاج اور نظر بند ہو کر اذیت ناک حالات سے دو چار ہیں سید تابش الوری نے کہا وہ حیرت زدہ ہیں کہ جو یورپ کتے بلیوں کی تکلیف پر تڑپ اٹھتا ہے وہ کشمیر میں انسانیت سوز مظالم اور ہٹلری بربریت کے ننگے ناچ پر کیوں خاموش نظر آتاہے۔ انھوں نے اقوام متحدہ اور رائے عامہ کے عالمی اداروں سے مطالبہ کیا کہ وہ خواب خرگوش سے بیدار ہوں اور کشمیری عوام کو ان کا حق خود ارادیت لانے کیلئے اپنی بھر پور عالمی قوت بروئے کار لائیں۔

سیمینار

مزید :

ملتان صفحہ آخر -