مقبوضہ کشمیر میں بھارتی مظالم اور غیر قانونی اقدامات،پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس میں بڑا قدم اٹھا لیا گیا

مقبوضہ کشمیر میں بھارتی مظالم اور غیر قانونی اقدامات،پارلیمنٹ کے مشترکہ ...
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی مظالم اور غیر قانونی اقدامات،پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس میں بڑا قدم اٹھا لیا گیا

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)پارلیمنٹ کےمشترکہ اجلاس میں بھارت کےغیرقانونی اقدامات اورمقبوضہ کشمیر میں ڈھائےجانےوالےمظالم کے خلاف قرارداد متفقہ طور پر منظور کر لی گئی  ،قرار داد میں بھارتی اقدامات اور مظالم کی مذمت کرتے ہوئےاقوام عالم سےنوٹس لینے کا مطالبہ کیا گیا ہے۔

نجی ٹی وی کےمطابق  پارلیمنٹ کامشترکہ اجلاس سپیکر قومی اسمبلی اسد قیصرکی صدارت میں ہوا، اجلاس میں وزیرخارجہ شاہ محمودقریشی نےقراردادپیش کی،جسکے  متن میں کہاگیاہےکہ کشمیریوں پربھارتی مظالم کی شدیدمذمت کرتےہیں،بھارتی اقدامات جنوبی ایشیا کےامن واستحکام کیلئےبڑاخطرہ بن چکے ہیں، جموں وکشمیرعالمی سطح پرتسلیم شدہ متنازعہ علاقہ ہے،بھارت غیر قانونی، یک طرفہ طور پرمقبوضہ  جموں و کشمیر کی قانونی حیثیت تبدیل نہیں کر سکتا، مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیاں فوری روکی جائیں،بھارت فوری9لاکھ سے زیادہ فوج  مقبوضہ جموں و کشمیر سے نکالے،بھارت غیر جانبدار مبصرین اور میڈیا کو کشمیر جانے کی اجازت دے،  بھارت کی جانب سے کی گئی  انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کی تحقیقات کرائی جائے،بھارت نے ایک سال سے مقبوضہ کشمیر میں لاک ڈاون کیا ہوا ہے،سرچ  آپریشن کے نام پر نہتے کشمیریوں کو نشانہ بنایا جا رہا ہے، قرارداد میں کہا گیا ہے کہ بھارت ایل او سی پر شہری آبادی کو مسلسل نشانہ بنا رہا ہے۔ سپیکر قومی اسمبلی نے قرارداد پر رائے شماری کرائی، جس کے بعد  قرارداد متفقہ طور پر منظور کرلی گئی۔

مزید :

قومی -