قومی ترانہ کی از سر نو ریکارڈنگ14اگست کو ریلیز کی جائیگی

 قومی ترانہ کی از سر نو ریکارڈنگ14اگست کو ریلیز کی جائیگی

  

  اسلام آباد(پ ر)پاکستان کی آزادی کی 75ویں سالگرہ کے موقع پر،پاکستان کے قومی ترانہ کی از سر نو ریکارڈنگ کیلئے قائم کردہ اسٹیئرنگ کمیٹی 14اگست2022کو حکومت پاکستان کی جانب سے اس کی باضابطہ ریلیز کی منتظر ہے۔یہ کمیٹی جون2021میں تشکیل دی گئی اور اپریل 2022میں موجودہ حکومت کی جانب سے مزید دیئے گئے اختیارات کے تحت،اسٹیئرنگ کمیٹی نے قومی ترانہ کی از سر نو ریکارڈنگ کی کوشش کی ہے،جو کہ اصل الفاظ کے تقدس اور موسیقی کی ساخت کو یقینی بناتے ہوئے آواز وں اور اظہار میں تازہ ترین شمولیت کی عکاسی کرتی ہے۔احمد غلام علی چھاگلہ کی ہلچل مچا دینے والی طاقتور موسیقی کو 1949 میں اس وقت کے وزیر اعظم لیاقت علی خان نے باضابطہ طور پر منظور کیا،تاہم ابو الاثر حفیظ جالندھری کے لکھے گئے خوبصورت اور متاثر کن الفاظ کو 1954میں باقاعدہ طور پر منظور کیا گیا اور پھر اسے موسیقی کے ساتھ ریکارڈ کیا گیا۔اس پہلی ریکارڈنگ میں آوازوں کی ایک محدود تعداد شامل تھی،اور اس وقت کی دستیاب تکنیکی سہولیات کا استعمال کیا گیا تھا، ان 68سالوں میں موسیقی کی ٹیکنالوجی میں بڑی ترقی ہوئی ہے اور ساتھ ہی ملک میں موسیقی کا نیا ٹیلنٹ بھی سامنے آیا ہے۔غیر تبدیل شدہ اصل الفاظ اور کمپو زیشن کے نئے صوتی اور آلاتی ورژن تیار کرنے کی منصوبہ بندی کرتے ہوئے،اسٹیئرنگ کمیٹی نے ایک ہمہ گیر،صنفی توازن پر مبنی نقطہ نظر کا اطلاق کیا اورمتنوع علاقائی،ثقافتی اورنسلی پس منظر سے تعلق رکھنے والے تمام مذہبی عقائد اور موسیقی کی انواع سے تعلق رکھنے والے گلوکاروں کو شامل کیا۔بری فوج،فضائیہ اور بحریہ کے بینڈ کے 48 موسیقاروں نے مہارت سے موسیقی کے آلات بجائے۔ 2022میں از سر نو ریکارڈنگ قوم کے بھرپور جوش و جذبہ کو منانے اور پاکستان کے لوگوں کی منفرد قومی شناخت اور یکجہتی کی عکاسی کرنے کا موقع بن گئی ہے۔

مزید :

کلچر -