زیارات کیلئے رجسٹریشن کا عمل آخری مراحل میں ہے،عثمان سروش علوی 

زیارات کیلئے رجسٹریشن کا عمل آخری مراحل میں ہے،عثمان سروش علوی 

  

لاہور (انٹرویو:میاں اشفاق انجم) کم وقت اور مشکل ترین حالات میں سرکاری حج2022ء آؤٹ سٹیڈنگ رہا۔ وفاقی وزیر مذہبی امور مفتی عبدالشکور کی غیر معمولی دلچسپی اور سیکرٹری آفتاب دورانی کے دن رات کے فلوپ کی وجہ سے سب کچھ ممکن ہو سکا وزارت کی ٹیم کا ناممکن کو ممکن بنانے میں اہم کردار ہے وفاقی کابینہ کی طرف سے تحسین اعزاز کی بات ہے۔ پرائیویٹ حج سکیم میں بھی بہتری آئی ہے صرف100 کے قریب شکایات سامنے آئی ہیں۔ سرکاری حجاج کی سبسڈی پر کام ہو رہا ہے،12اگست کو پوسٹ ج آپریشن کامیابی سے مکمل کر لیا جائے گا۔ سعودی حکومت کے حج اکبر کے لئے انتظامات شاندار تھے، حج کی طرح زیارات کے لئے رجسٹریشن کا عمل تکمیل کے آخری مراحل میں ہے، عمرہ آرگنائز کو نیٹ میں لانے کے لئے تجاویز قابل غور ہیں۔ ان خیالات کا اظہار سینئر جوائنٹ سیکرٹری حج عثمان سروش علوی نے روزنامہ ”پاکستان“ سے لاہور میں خصوصی انٹرویو میں کیا ان کا کنا تھا دو سال حج نہ ہونے کی وجہ سے دنیا بھر کی طرح اہل پاکستان بھی اداس تھے سعودی حکومت کی طرف سے حج کے اعلان اور حج اکبر ہونے کی وجہ سے جوش و خروش دیدنی تھا۔سعودی تعلیمات میں تاخیر ڈالر اور ریال کی قیمتوں میں بے تحاشا اضافے کی وجہ سے خدشات زیادہ تھے،معلمین کے خاتمے اور موسسہ جنوب ایشیاء کی طرف سے نیا نظام دینے کی وجہ سے بھی پریشانی تھی مکاتب کی قیمتوں میں بے تحاشا اضافہ بھی مسائل پیدا کر رہا تھا اس کے باوجود وزیراعظم پاکستان میاں شہباز شریف کی طرف سے ہر صورت سستا حج کرانے کے اعلان کا ہر طرف بھرپور خیر مقدم کیا جا رہا تھا۔ درویش صفت وفاقی وزیر مذہبی امور مفتی عبدالشکور کی ضیوف الرحمن کی خدمت کے جذبے اور حج اپریشن کو ہر صورت کامیابی سے ہمکنار کرنے کے عزم نے ناممکن کو ممکن بنایا۔ حکومتی فیصلوں کو جس انداز میں وفاقی سیکرٹری آفتاب دورانی نے عملی جاہ پہنایا وہ قابل ستائش ہے کم وقت اور مشکل حالات میں مکہ مدینہ میں عمارتوں کا حصول ٹرانسپورٹ اور کھانے کے انتظامات، حج مشن مکہ کا کردار نظر انداز نہیں کیا جا سکتا،میں وزارت مذہبی امور کے ذمہ داران اور کارکنان کو سلام پیش کرتا ہوں جنہوں نے جدہ مدینہ ایئر پورٹ پر استقبال اور اب روانگی میں خدمات انجام دیں ہیں، پری حج کی طرح پوسٹ حج بھی12اگست کو کامیابی سے مکمل کر لیں گے آخری فلائٹس مدینہ سے آئیں گی۔سینئر جوائنٹ سیکرٹری حج نے کہا سرکاری کی طرح پرائیویٹ حج سکیم بھی ہماری ہے۔ پرائیویٹ حج سکیم پر اعتماد تھا تو60فیصد کوٹہ دیا سرکاری ج سکیم کا حج اس سال شانداررہا اگر کہہ لیا جائے آؤٹ سٹیڈنگ رہا تو غلط نہ ہو گا۔پرائیویٹ سکیم میں بھی بہتری آئی ہے،100 سے زائد شکایات سامنے آئیں ان پر کام ہو رہا ہے، سی ڈی سی میں سب کچھ کلیئر ہو جائے گا غلطیاں تو ہوتی ہیں ہم سے بھی ہوئی ہیں غلطیوں کو دہرانا نہیں چاہئے ہر مرحلے میں ہوپ سے مشاورت رہی ہے،کوئی فیصلہ مسلط نہیں کیا،پانچ فیصد بنک گارنٹی کو غلط رنگ دینے کی کوشش کی گئی،حالانکہ مشاورت سے طے پانے والے سروس پروائیڈر کا اہم نکات ہے جس کو کوئی فرد ختم نہیں کر سکتا تھا۔ وفاقی وزیر نے جس انداز میں کام کیا ہے قابل ستائش ہے، زیارات کے لیے رجسٹریشن کے حوالے سے عثمان سروش علوی نے بتایا سرکاری ایجنسی کے پاس ہے رجسٹریشن کا عمل آخری مرحلے میں ہے عمرہ آرگنائزر رجسٹرڈ نہیں ہیں مسائل پیدا کرتے ہیں، حج کی طرح عمرہ آرگنائزرکو رجسٹرڈ کرنے کے لئے بھی تجاویز زیر غور ہیں سالہا سال سے کام کرنے والے حج آرگنائزر کو آئندہ پانچ سال کے لئے رجسٹرڈ کرنے کے حوالے سے سوال کا جواب دیتے ہوئے کہا سب کچھ قبل ازوقت ہے۔ سعودی حکومت کی طرف سے کوٹہ آنے کے بعد موجود افسران فیصلہ کریں گے اس وقت ہوپ کو مسئلہ اٹھانا چاہیے۔انہوں نے کہا تمام کمپنیوں کا کوٹہ برابر کرنے کی کوئی تجویز قابل غور نہیں،50 والوں کا کوٹہ بڑھانے کے حوالے سے سوال کا جواب دیتے ہوئے کہا پاکستان کا کوٹہ بڑھا تو اس پر ضرور غور ہونا چاہیے۔انہوں نے کہا میرے لئے سب قابل احترام ہیں کسی کا مخالف نہیں، جو جو ذمہ داری مجھے دی گئی ہے ایمانداری سے کرنے پر یقین رکھتا ہوں۔

عثمان سروش علوی 

مزید :

صفحہ آخر -