مقبوضہ کشمیر کی صورتحال تشویشناک، بلاول بھٹو کا او آئی سی سیکریٹری جنرل کو خط

  مقبوضہ کشمیر کی صورتحال تشویشناک، بلاول بھٹو کا او آئی سی سیکریٹری جنرل کو ...

  

      اسلام آباد (این این آئی)وزیر خارجہ بلاول بھٹو زر داری نے مقبوضہ کشمیر کی تشویشناک صورتحال پر او آئی سی کے سیکرٹری جنرل کو خط لکھ دیا۔وزیر خارجہ بلاول بھٹو زر داری نے مقبوضہ کشمیر کی تشویشناک صورتحال پر او آئی سی کے سیکرٹری جنرل کو خط لکھ دیا،ہندوستان کے غیر قانونی طور پر مقبوضہ جموں و کشمیر کی سنگین صورتحال سے آگاہ کیا۔خط میں وزیر خارجہ نے یاد دلایا کہ تین سال قبل 5 اگست 2019 کو بھارت نے میں غیر قانونی اور یکطرفہ اقدامات نافذ کیے تھے۔ خط میں کہاگیاکہ وحشیانہ فوجی محاصرے اور مقبوضہ علاقے کے لوگوں کی بنیادی آزادیوں پر سخت پابندیاں لگائی گئیں۔ خط میں کہاگیاکہ غیر قانونی آبادیاتی تبدیلیاں، اور کشمیری قیادت کی قید کی صورت میں سنگین مظالم جیسے اقدامات کئے گئے۔ خط میں کہاگیاکہ ماورائے عدالت قتل؛ جبری گمشدگیاں؛ من مانی نظربندیاں؛ اور 'کورڈن اینڈ سرچ' آپریشنز کا آغاز کیا۔ بلاول بھٹو زر داری نے کہاکہ ہندوستان کے اقدامات بین الاقوامی قانون کی صریح خلاف ورزی ہیں، انہوں نے کہاکہ او آئی سی وزرائے خارجہ کی کونسل کے 48 ویں اجلاس میں 5 اگست کو بھارت کی طرف سے کیے گئے غیر قانونی اور یکطرفہ اقدامات کو مسترد کر دیا۔ انہوں نے کہاکہ ہندوستان 5 اگست 2019 کو یا اس کے بعد کیے گئے تمام غیر قانونی اور یکطرفہ اقدامات کو واپس لے اور جموں و کشمیر پر اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی قراردادوں کے مکمل نفاذ کے لیے ٹھوس اور بامعنی اقدامات کرے۔انہوں نے کہاکہ او آئی سی کی متعلقہ قراردادوں کے مطابق جموں و کشمیر کے تنازع کا دیرپا حل تلاش کرنے کی سفارتی کوشش تیز کی جائیں۔ وزیرِ خارجہ  بلاول بھٹو زرداری نے کہا  ہے کہ کشمیریوں کو آزادی ملنے تک چین سے نہیں بیٹھیں گے۔ وزیرِ خارجہ، چیئرمین پاکستان پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری نے یومِ استحصالِ کشمیر پر جاری کیے گئے پیغام میں کہا کہ 3 سال سے مقبوضہ کشمیر کے شہری بنیادی حقوق سے محروم ہیں، بھارت نے اقوامِ متحدہ کی قرار دادوں کو پامال کی ہے۔ وزیرِ خارجہ بلاول بھٹو زرداری نے مطالبہ کیا کہ بھارت سے یاسین ملک اور میر واعظ عمر فاروق سمیت تمام قیدیوں کی رہائی کی جائے۔ انہوں نے اپیل کی ہے کہ اقوامِ متحدہ مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق بحال کرائے۔

بلاول خط

 اسلام آ باد (مانیٹرنگ ڈیسک،آئی این پی) وزیر خارجہ بلاول بھٹو زرداری کی انڈونیشیا کی وزیر خارجہ ریتنو مرسودی سے ہوئی جس میں دونوں رہنماوں  نے باہمی دلچسپی کے دوطرفہ اور علاقائی امور پر تبادلہ خیال کیا۔ جمعہ کو  وزیر خارجہ بلاول بھٹو زرداری کی  کمبوڈیا میں 29ویں آسیان ریجنل فورم کے وزارتی اجلاس کے موقع پر انڈونیشیا کے وزیر خارجہ رتنو مارسودی  سے ملاقات ہوئی۔ ملاقات میں دونوں رہنماوں نے مشترکہ تاریخ، ثقافت اور عقیدے سے جڑے دوطرفہ تعلقات میں مسلسل پیش رفت پر اطمینان کا اظہار کیا۔ دونوں رہنماوں کے درمیان تعلقات کو مزید مستحکم بنانے اور رفتار فراہم کرنے کے لیے ہر سطح پر دو طرفہ تبادلوں اور باقاعدہ بات چیت کی اہمیت پر بھی اتفاق کیا گیا۔ وزیر خارجہ نے انڈونیشیا کی حکومت کی جانب سے پاکستان کو پام آئل کی برآمدات کے لیے بروقت سہولت فراہمی پر انڈونیشیا کے وزیر خارجہ سے تشکر کا بھی اظہار کیا۔ ملاقات میں دونوں وزرائے خارجہ نے او آئی سی کے لیے تشویشناک امور پر تبادلہ خیال ہوا اور ایشیا پیسیفک میں پیش رفت اور مسائل کے بارے میں بھی تبادلہ خیال ہوا۔ ملا بلاول بھٹو زرداری کی کمبوڈیا میں جاری ARF کے وزارتی اجلاس کے موقع پر یورپی یونین کے اعلی نمائندہ جوزف بوریل سے ملاقات کی  جس میں  دونوں  نے پاکستان اور یورپی یونین کے درمیان دوطرفہ اور علاقائی تعاون کے امور پر تبادلہ خیال کیا، دونوں رہنماوں نے باقاعدہ تبادلوں اور باہمی فائدہ مند تعاون کی اہمیت پر اتفاق کیا۔ وزیر خارجہ نے دوطرفہ تجارت پر جی ایس پی پلس کے اثرات کو بھی سراہا اور پاکستان میں ترقیاتی منصوبوں کے لیے یورپی یونین کی حمایت کرتے ہوئے پولیٹیکل ڈائیلاگ کے ساتھ ساتھ پاک یورپی یونین اسٹریٹجک ڈائیلاگ کے جلد از جلد انعقاد کی اہمیت پر زور دیا۔ دونوں رہنماؤں نے افغانستان کی تازہ ترین صورتحال اور سیاسی منظر نامہ میں پیش رفت پر تبادلہ خیال کیا۔ وزیر خارجہ بلاول بھٹو زرداری نے افغانستان میں انسانی اور معاشی بحران کو روکنے کے لیے مسلسل رابطے اور بات چیت کی اہمیت پر زور دیا۔ انہوں نے اعلی نمائندے کو انسانی امداد کی فراہمی کے لیے پاکستان کی کوششوں سے بھی آگاہ کیا۔ وزیر خارجہ اور یورپی یونین کے اعلی نمائندے نے افغانستان کی صورتحال پر قریبی رابطہ کاری اور خطے میں امن و استحکام کے لیے مل کر کام جاری رکھنے پر اتفاق کیا۔

بلاول ملاقاتیں 

مزید :

صفحہ اول -