فنڈنگ کیس میں عمران نیازی کی حقیقت سامنے آگئی: نواب یوسفزئی 

فنڈنگ کیس میں عمران نیازی کی حقیقت سامنے آگئی: نواب یوسفزئی 

  

      پشاور (سٹی رپورٹر) اے ین پی کے سابق ضلعی جنرل سکٹریری اور ممبر مرکزی کونسل۔نواب علی یوسفزی نے کہا کہ اج کل پرنٹ و الیکٹرانک میڈیا کے علاوہ سوشل میڈیا اور یوٹیوب پر عمران احمد جالندھری کی کرپشن چوری اور غیر قانونی فنڈنیگ کا شور ھر طرف سے سننے کو مل رھا ھے جس کو الیکشن کمیشن نے ثبوتوں کے ساتھ حکومت کو پیش کر دیا اب اس کیس کو حکومت  دنوں کے اندر ریفرنس بناکر سپریم کورٹ کو مزید کارروایی کے لیے ارسال کرنے کا پابند ھے اکثر اینکر پر سن بٹھو صاحب کی طرف سے  میں نیشنل عوامی پارٹی کے خلاف ریفرنس سپریم کورٹ بیھجاتھا اس کیس اور عمران کے کیس میں زمین اسمان کا فرق ھے نیپ پر بٹھو صاحب کی طرف سے نیپ پر پابندی سیسی نوعیت کی تھی اور عمران احمد کے خلاف ریفرنس غیر ممالک سے غیر قانونی طور پر چندہ کے نام پر بھاری رقم وصول کرکے اسکو انکم ٹکس اور الیکشن کنیشن سے چپھایا گیا اور دشمن ملک اسراییل و انڈیا سے رقم وصول کرکے اپنی پارٹی پر خرچ کرکے اقتدار میں اکر دشمن ملک کا الہ کار بننے اور اپنے ملک کو تباہ کرنے کے لیے مبینہ طور پر استمعال ھونے تھے اس لیے اب  بات کی  ضرور واضعت کرنی ھے کہ نیشنل عوامی پارٹی ملک میں ایینی قانونی اور عوام کو انکا جنہوری حق دلانے کے لیے ملک کے تمام پارٹیوں نے یو ڈی ایف محاذ بناکر بٹھو صاحب کی غیر جمہوری احکامات کو روکنا تھا اور یہ بات بٹھو صاحب اپنے شان کے خلاف سمجھتے تھے تو اس نے رہبر تحریک خان عبدلولی خان سے زاتی انتقام لینے کے لیے انکے خلاف ملک مفاد کے خلاف مقدمہ بناکر پہلے انکو گرفتار کر لیا اور پھر ایوب خان کے بناییے ھویے ایین  میں ترمیم کرکے اسکو سپریم کورٹ ارسال کیا جو سراسر سیاسی بددیانتی تھی اور اج عمران جالندھری پر جو کیس بنیے ہیں وہ خالص مالی بے ضابطگیوں کرپش اور باھر سے انے والی امداد رقم میں غبن کرنے دشمن مملک۔سے خفیہ طور پر بھاری رقم لیکر اسکو اپنی ذاتی اغراض و مقاصد کے لیے استعمال کرنے کے واضح ثنوتوں کے ساتھ الیکشن کمیشن نے حکومت کو مزید قانونی کرروایی کے لیے عدالت عالیہ بیھج دیا اب چیف جسٹس بندیال صاحب کو تین کی بجایے فل کورٹ بناکر تحریک انصاف کی مستقبل کا فیصلہ کرنا ہے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -