کشمیر محکوم اور محصور انسان کا قلعہ بن چکا ہے، فائق شاہ

    کشمیر محکوم اور محصور انسان کا قلعہ بن چکا ہے، فائق شاہ

  

پشاور(سٹی رپورٹر) چیئرمین امن ترقی پارٹی محمد فائق شاہ نے یوم استحصال پر کشمیری وفود سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ 5اگست 2019 ء سے کشمیر لاکھوں انسانوں کی محکومی اور حصار کا قلعہ بن چکا ہے، دنیا اس قلعے میں بھارتی فوج اور حکومت کے مظالم برداشت کر رہی ہے مگر ان کے پاۂ استقلال میں لغزش نہیں آئی، یہ آزادی کی سچی تڑپ اور میراث ہے، ایک صدی کی یہ تحریک جس میں ہزاروں بچوں، نوجوانوں اور خواتین نے جام شہادت نوش کیا تاریخ کا بدترین جبر و استحصال کیا گیا مگر جذبہ آزادی کو دبایا نہیں جا سکا یہ انسانی حقوق پر بدنما داغ ہے جسے عالم انسانیت کو مٹانا ہے، عالم اسلام، اقوام متحدہ اور انسانی حقوق تنظیموں کو اس کا نوٹس لینا چاہیے۔محمد فائق شاہ نے کہا کہ بھارتی حکومت نے کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کر کے عالمی قوانین کو روند ڈالا مگر دنیا خاموش ہے کیا اس سے بڑا انسانی المیہ کوئی اور ہوگا؟ انہوں نے کہا کہ پاکستانی حکومت خارجہ پالیسی اور سفارت کاری کے ذریعے اس مقدمے کی درست پیروی کرے تاکہ مقبوضہ کشمیر میں حق خودارادیت کا تسلیم شدہ مقدمہ جیتا جا سکے، روایتی بیان بازی چھوڑ کر جامع پالیسی بنائی جائے۔محمد فائق شاہ نے کہا کہ امریکہ، برطانیہ اور بڑے ممالک نے اس مسئلے کے حل کے کتنے وعدے کئے مگر ان کو معصوم انسانوں کی محکومی و مظلومیت نظر نہیں آ رہی، امن ترقی پارٹی کشمیریوں کی اس جدوجہد کو سلام پیش کرتی ہے اور ہر فورم پر موثر آواز بن کر آزادی کا مقدمہ لڑے گی مودی حکومت تاریخ انسانیت پر بدنما داغ اور ریاستی دہشت گرد ہے، دنیا اپنے مفادات کو ایک طرف رکھ کر انسانی بنیادوں پر یہ مسئلہ حل کرے اور فی الفور یہ حصار، ظالم اور استحصال ختم کروایا جائے وگرنہ اسکی قیمت پوری دنیا کو چکانی پڑے گی۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -