حافظ نعیم الرحمن کا بلدیاتی الیکشن میں پولنگ اسٹیشنز پر فوج کی تعیناتی کا مطالبہ

    حافظ نعیم الرحمن کا بلدیاتی الیکشن میں پولنگ اسٹیشنز پر فوج کی تعیناتی ...

  

      کراچی(اسٹاف رپورٹر)امیرجماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمن نے کراچی میں بلدیاتی الیکشن میں پولنگ اسٹیشنزپر فوج کی تعیناتی کا مطالبہ کردیا۔سندھ ہائیکورٹ میں بلدیاتی انتخابات سے متعلق درخواست دائر کرنے کے بعد امیر جماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ کراچی میں تمام پولنگ اسٹیشنزحساس ہیں، الیکشن میں فوج اوررینجرزکی تعیناتی ہمارا آئینی مطالبہ ہے، حکومت امن وامان برقراررکھنے کیلئے فوج طلب کرسکتی ہے۔انہوں نے کہاکہ تمام پولنگ اسٹیشنزپرپاک فوج اوررینجرزکوہوناچاہیے، کراچی کے مسائل کو حل کرنے کی ضرورت ہے،جس کے لیے ضروری ہے کہ بلدیاتی انتخابات کاانعقادکیاجائے۔انہوں نے کہا کہ  سندھ ہائیکورٹ میں درخواست دائر کی ہے جس میں کہا گیا ہے کہ بلدیاتی الیکشن کو بروقت اور فوری طور پر منعقد کیا جائے۔ حکومت اور دیگر لوگ فرار کے راستے اختیار کرنا چاہتے ہیں ان کو فرار کا راستہ نہ دیا جائے، وہ تمام چیزیں جو الیکشن سے متعلق ہیں، بیلٹ پیپرز جو چھپ چکے تھے وہ غیر محفوظ ہیں، عدالت الیکشن کمیشن کو نئے بیلٹ پیپرز چھپوانے کا حکم دے۔حافظ نعیم الرحمان نے کہا کہ الیکشن عملہ سیاسی طور پر لگایا گیا ہے اس کو دیکھا جائے، ہم اختیارات کا رونا نہیں روئیں گے اور عوام کے ساتھ  مل کر جدوجہد کریں گے۔حافظ نعیم الرحمان نے کہا کہ شہر کا برا حال ہے سڑکیں ٹوٹ پھوٹ کا شکار ہیں، جھنڈے لگا کر سڑکیں اور گٹر لائنیں بنوائی گئی جبکہ اس اس بارش میں اربوں روپے بہہ گئے ہیں۔انہوں نے کہا کہ سندھ حکومت مختلف آبادیوں میں لوگوں کو کہے رہے ہیں ہمارے ساتھ نہیں چلو گے تو فنڈز نہیں دیں گے، پولیس کو بھی استعمال کیا جارہا ہے۔امیر جماعت اسلامی نے کہاکہ چوبیس جولائی کو الیکشن ہونے جارہا تھا۔ الیکشن کمیشن نے بارش کا بہانہ بناکر الیکشن موخر کردیا۔انہوں نے کہا کہ کوئی اپنی ذمہ داری ادا کرنے کو تیار نہیں ہے، جماعت اسلامی تین کروڑ لوگوں کو مافیاز کے حوالے سے نہیں کر سکتی ہے۔حافظ نعیم الرحمن نے کہا کہ الیکشن کمیشن ضمنی قومی انتخابات کو بلدیاتی الیکشن سے جوڑ دیتا ہے، اس وقت بلدیاتی انتخابات فوقیت ہونی چاہیے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -