راجن پور،ملاوٹ مافیا متحرک،فوڈ اتھارٹی ٹیموں کی خاموشی پر احتجاج

راجن پور،ملاوٹ مافیا متحرک،فوڈ اتھارٹی ٹیموں کی خاموشی پر احتجاج

  

راجن پور (نا مہ نگار)راجن پور شہر اور گردونواح میں ملاوٹ شدہ اشیا دوکاندار دھڑلے سے فروخت کر رہے ہیں کوئی پوچھنے والا نہیں ضلع راجن پور کی انتظامیہ محمکہ فوڈ اتھارٹی کے ذمہ داران  اور اسسٹنٹ کمشنر راجن پور نے جان بوجھ کر آنکھیں بند کر رکھی ہیں (بقیہ نمبر32صفحہ6پر)

 فیکٹریوں سے کیمیکل پوڈر سے تیار شدہ اور پانی ملا دودھ  دہی  دوکاندار شہر گلی محلوں میں 120 روپے سے 100 روپے فی کلوگرام دھڑلے سے فروخت کر رہے ہیں اس کے علاہ پرچون فروش ویسن ہلدی سرخ مرچیں چاے پتی مصالحہ جات ملاوٹ شدہ سرعام بغیر سرکاری ریٹ لسٹ لگاے من مرضی کے ریٹ لگا کر غریب عوام کو دونوں ہاتھوں سے لوٹ رہے ہیں دوسری جانب قصاب لاغر اور بیمار جانوروں کا گوشت پانی ملا کر دھڑلے سے بڑے جانور کا 5 سوروپے سے 600 روپے اور چھوٹے جانور کا 1000  سے لیکر 1200 روپے تک فروخت کر رہے ہیں مٹھن کوٹ۔راجن پور شہر میں خالص ایشا ملانا ناممکن ہو چکی ہے جس کی وجہ عوام موذی مرضوں میں مبتلا ہو رہے ہیں ملاوٹ شدہ اشیا کھانے پینے کی وجہ سے جگر گردے ہیپاٹائٹس ڈی بی کے مرض بڑھ رہے ہیں راجن پورکے شہریوں نے وزیر اعلی چوہدری پرویز الہی کمشنر راجن پور سے مطالبہ کیاہے کہ ملاوٹ شدہ اشیا مہنگے داموں فروخت کر والوں کے خلاف فوری کارروائی کی جائے

مزید :

ملتان صفحہ آخر -