سپریم کورٹ نے شوہر پر بیوی کے حق سے متعلق انتہائی اہم حکم جاری کر دیا، سب کچھ واضح کردیا

سپریم کورٹ نے شوہر پر بیوی کے حق سے متعلق انتہائی اہم حکم جاری کر دیا، سب کچھ ...
سپریم کورٹ نے شوہر پر بیوی کے حق سے متعلق انتہائی اہم حکم جاری کر دیا، سب کچھ واضح کردیا

  

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) ایک مقدمے کا فیصلہ سناتے ہوئے سپریم کورٹ نے شوہر پر بیوی کے حق کے متعلق انتہائی اہم حکم جاری کر دیا۔ نیوز ویب سائٹ’پروپاکستانی‘ کے مطابق جسٹس سید منصور علی شاہ نے اپنے تحریر کردہ فیصلے میں کہا ہے کہ ”جب تک بیوی اپنے شوہر سے وفادار رہے اور ازدواجی ذمہ داریاں پوری کرتی رہے، اس وقت تک بیوی کے تمام حقوق پورے کرنا شوہر کی ذمہ داری ہے۔“

جسٹس سید منصور علی شاہ نے فیصلے میں لکھا کہ ”شوہر بیوی کے تمام حقوق ادا کرنے کا پابند ہے خواہ نکاح کے وقت دونوں کے مابین اس حوالے سے کوئی معاہدہ نہ ہوا ہو یا بیوی خود اپنے وسائل سے اپنی ذمہ داریاں پوری کر رہی ہو۔“ رپورٹ کے مطابق سپریم کورٹ کے تین رکنی بنچ نے یہ احکامات حسن اللہ نامی شہری اور اس کی اہلیہ ناہید بیگم کے مقدمے کے فیصلے میں جاری کیے۔ 

حسن اللہ کی اہلیہ ناہید بیگم کی طرف سے چارسدہ کی فیملی کورٹ میں اپنے مہر کی وصولی کے لیے مقدمہ دائر کیا گیا تھا۔اس مقدمے میں ناہید بیگم نے اس چار کنال اراضی کی ادائیگی کا دعویٰ کیا تھا جس کا نکاح نامہ کے کالم نمبر 16میں ذکر کیا گیا تھا۔ اس کے علاوہ ناہید بیگم نے اپنے اور اپنے 5نابالغ بچوں کی کفالت کا دعویٰ بھی کیا تھا، کیونکہ شوہر نے دوسری شادی کر لی تھی اور اب وہ اپنی دوسری بیوی کے ساتھ رہ رہا تھا۔

عدالت نے نابالغ بچوں کی کفالت کے دعوے کی حد تک ناہید بیگم کے حق میں فیصلہ سنایا تاہم مہر کی وصولی اور ذاتی کفالت کے دعوﺅں کو مسترد کر دیا۔ ضلعی عدالت نے بھی اس فیصلے کو برقرار رکھا اور ناہید بیگم کی اپیلیں خارج کر دیں۔ اس کے بعد خاتون نے پشاور ہائی کورٹ سے رجوع کیاجہاں سے فیصلہ ناہید بیگم کے حق میں آ گیا اور ہائی کورٹ نے حسن اللہ کو مہر کی رقم، زمین اور کفالت کرنے کا حکم دے دیا تاہم حسن اللہ ہائی کورٹ کے اس حکم کے خلاف سپریم کورٹ چلا گیا۔جہاں گزشتہ روز سپریم کورٹ نے اس کی درخواست بے بنیاد قرار دیتے ہوئے خارج کر دی اور پشاور ہائی کورٹ کے فیصلے کو برقرار رکھا۔

مزید :

علاقائی -اسلام آباد -