پی اے سی نے تین سال پرانی گاڑیاں درآمد کرنے کا نوٹس لے لیا

پی اے سی نے تین سال پرانی گاڑیاں درآمد کرنے کا نوٹس لے لیا
پی اے سی نے تین سال پرانی گاڑیاں درآمد کرنے کا نوٹس لے لیا

  

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) پبلک اکاونٹس کمیٹی( پی اے سی) نے پانچ سال کی بجائے تین سال پرانی گاڑیاں درآمد کرنے کے فیصلے کا نوٹس لے لیا ، ایف بی آر حکام کا کہنا ہے کہ فیصلے سے 17 ارب روپے کے ریونیو کا نقصان ہو گا۔ پی اے سی کا اجلاس چیئرمین ندیم افضل چن کی زیر صدارت ہوا جس میں کہا گیا کہ پانچ سال پرانی گاڑیوں کے بارے میں پی اے سی کے فیصلے کی خلاف ورزی کی گئی۔ ایف بی آر حکام نے بریفنگ میں بتایا کہ کابینہ نے تین سال پرانی گاڑیاں منگوانے کی منظوری دیدی۔ وزارت صنعت ایف بی آر کو اعتماد میں لیے بغیر کابینہ میں گئی اورمقامی صنعت نے ملک میں پرزے بنانے کے فروغ کی شرط پوری نہیں کی۔ پی اے سی میں پاکستان ٹورازم ڈویلپمنٹ کارپوریشن کے آڈٹ اعتراضات کا جائزہ بھی لیا گیا۔نجی چینل کے مطابق ندیم افضل چن اکیلے ہی کمیٹی کی کارروائی چلاتے رہے۔

مزید :

بزنس -