لندن میں پہلے بیٹا پھر ماں بھی شہید ہوگئی

لندن میں پہلے بیٹا پھر ماں بھی شہید ہوگئی
لندن میں پہلے بیٹا پھر ماں بھی شہید ہوگئی

  

  لندن (بیورو رپورٹ) کراﺅن کورٹ نے پاکستانی نژاد برطانوی مسلم خاتون کو اپنے 7سالہ بیٹے کو تشدد کر کے ہلاک کرنے کے جرم میں عمر قید کی سزا سنا دی۔ عدالت میں پولیس کی طرف سے موقف اختیارکیا گیا تھا کہ سارا نامی خاتون نے اپنے سات سالہ معصوم بچے کو تشد دکر کے ہلاک اس لیے کر دیا تھا کہ وہ تین مہینے میں قران کے 35صفحات زبانی یاد نہیں کر پا رہا تھا جس پر اسے طیش آ گیا اور اس نے اپنے اکلوتے بیٹے یاسین کو تشد دکر کے شدید زخمی کر دیا بعد ازاں اس نے گھر کو آ گ لگا کر یہ ظاہر کرنے کی کوشش کی کہ بچہ آگ لگنے سے ہلاک ہو گیا ہے۔ یاسین کی والدہ نے بعدمیںیہ موقف بھی اختیارکیا کہ یاسین کو شیطان نے ہلاک کیا ہے۔ یاسین کا والد محمد یوسف ایک ٹیکسی ڈرائیور ہے اس نے عدالت کو بتایا کہ اس نے کبھی بھی اپنی بیوی کو یاسین پر تشدد کرتے ہوئے نہیں دیکھا ۔

مزید :

انسانی حقوق -