دہشتگردی کیخلاف جنگ میں 50ہزار پاکستانی شہید،80ارب ڈالر کا نقصان ہوا

دہشتگردی کیخلاف جنگ میں 50ہزار پاکستانی شہید،80ارب ڈالر کا نقصان ہوا

اسلام آباد( آئی این پی ،اے این این)وفاقی وزارت داخلہ نے دہشتگردی سے ہونے والے نقصانات اور معاوضے کی تفصیلات قومی اسمبلی میں پیش کردیں،جن میں کہا گیا ہے کہ دہشتگردی کے خلاف10سالہ جنگ میں 50ہزار پاکستانی شہید ہوئے،80ارب ڈالر کا نقصان ہوا،ملک میں 60کالعدم تنظیمیں سرگرم ،3زیر نگرانی ہیں، زیارت ریزیڈنسی پرحملے میں 142 ملین روپے کا نقصان ہوا۔قومی اسمبلی میں وزارت داخلہ کی طرف سے دہشتگردی سے ہونے والے نقصانات اور معاوضے کی تحریری تفصیلات پیش کی گئیں جن میں ایوان کو بتایا گیا ہے کہ دہشتگردی کے خلاف دس سالہ جنگ میں پچاس ہزار پاکستانی شہریوں نے جان کی قربانی پیش کی جبکہ ملک کو 80ارب ڈالر کا نقصان برداشت کرنا پڑا ہے۔دہشتگردی کی بنیادی وجہ انتہا پسند گروپوں کا ملک میں سرگرم ہوناہے ۔ملک میں ساٹھ کالعدم تنظیموں کی نشاندہی کی گئی ہے ۔تین تنظیمیں زیر نگرانی ہیں ۔وزارت داخلہ کی طرف سے بتایاگیا کہ بلوچستان میں جاں بحق ، زخمی اور دیگر نقصانات کا تخمینہ 188.74ملین لگایاگیا ۔بلوچستان میں زخمی ہونے والوں کیلئے 583ملین روپے منظور کرلیے گئے ۔قومی سطح پر داخلی سلامتی کا نظام بنایا جارہاہے۔رپورٹ میں کہا گیا ہے ایک سال کے دوران خیبرپختونخوا میں 968،بلوچستان میں 369اور فاٹا میں 647 افراد دہشتگردی میں جاں بحق ہوئے جبکہ زیارت ریزیڈنسی حملے میں 142 ملین روپے کا نقصان ہوا۔ گزشتہ ایک سال میں پنجاب میں 10، سندھ میں 12 اور اسلام آباد میں دہشتگردی سے 2 پولیس اہلکارجاں بحق ہوئے۔ رپورٹ کے مطابق سندھ میں شہیداورزخمی ہونیوالوں کیلیے28.9 ملین روپے معاوضہ منظورکیاگیا جبکہ خیبرپختونخوا میں نقصانات کیلیے45.33 ملین روپے، بلوچستان میں جاں بحق افراد کے لواحقین کو 481 ملین، فاٹا میں شہید اور زخمیوں کیلیے 495.06 ملین روپے کا معاوضہ منظور کیا جبکہ نقصانات کے ازالے کے لئے 17 ہزار 364 ملین روپت معاوضہ منظور کیا گیا۔

مزید : صفحہ آخر

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...