قومی شناختی کارڈ کا حصول آسان ‘ غیر ضروری دستاویزات ‘کڑی شرائط ختم کرنیکا فیصلہ

قومی شناختی کارڈ کا حصول آسان ‘ غیر ضروری دستاویزات ‘کڑی شرائط ختم کرنیکا ...

  

خانیوال (نمائندہ پاکستان ) قومی شناختی کارڈ کے حصول یا اس میں ردّ و بدل کے سلسلہ میں نئی پالیسی جاری کرتے ہوئے غیر ضروری دستاویزات اور بعض شرائط ختم کرنے کا جو فیصلہ کیا ہے، نئی پالیسی کے تحت شناختی کارڈ میں بیوی کا نام درج کروانے کے لئے نکاح نامے کی شرط ختم کر دی گئی ہے (بقیہ 44نمبرصفحہ7پر )

اب صرف مرد کے فنگر پرنٹس لے کر اس کی بیوی کا نیا شناختی کارڈ بنا دیا جائے گا۔ تاریخِ پیدائش کے اندراج کے لئے اب کمپیوٹرائزڈ برتھ سرٹیفکیٹ پیش کرنا لازمی نہیں رہا۔ اس سے بلدیاتی اداروں میں ہونے والی بدعنوانی کی حوصلہ شکنی ہو گی۔ شناختی کارڈ میں نام کی تبدیلی کے لئے 20روپے کا بیان حلفی کافی ہو گا، اس ضمن میں گریڈ 17کے آفیسر کی متعلقہ کاغذات کی تصدیق کے لئے شرط ختم کر دی گئی ہے، اس رو سے شناختی کارڈ کے کاغذات کی تصدیق ہر شناختی کارڈ ہولڈر اپنے کارڈ کے حوالے سے کر سکتا ہے، اسی طرح تبدیلی نام کا اشتہار چھپوانے کی پابندی بھی ختم کر دی گئی ہے۔ نادرا کے ان اقدامات سے محکمہ کے اندر کام کی رفتار میں تیزی آئے گی اور شناختی کارڈ کے دفاتر کے باہر رش میں کمی آسکے گی۔

شرائط

مزید :

ملتان صفحہ آخر -