وفاق المدارس عربیہ پاکستان نے مدارس ایکٹ کو مسترد کردیا

وفاق المدارس عربیہ پاکستان نے مدارس ایکٹ کو مسترد کردیا

  

کوئٹہ( آن لائن)وفاق المدارس عربیہ پاکستان کی مرکزی مجلس شوریٰ کے رکن مفتی ڈاکٹر عادل خان نے حکومت کی جانب سے نام نہاد مدارس ایکٹ کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ مدارس دین کے قلعے ہیں ،مدارس کا دفاع آخری دم تک کریں گے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے جمعیت علمائے اسلام کے مرکزی ترجمان حافظ حسین احمد سے ملاقات اور جامعہ مطلع العلوم بروری روڈ کی مجلس شوریٰ سے خصوصی خطاب کرتے ہوئے کیا، انہوں نے کہا کہ حکومت کی جانب سے مدارس کو نیکٹا ، وزارت داخلہ ، وزارت خارجہ ،وزارت مذہبی امور کی تحویل میں دینے کی بھرپور مذمت کرتے ہیں اور حکومت کے ایسے اقدام کو کسی صورت برداشت نہیں کیا جائے گا، انہوں نے کہا کہ مدارس کو وزارت تعلیم کے ماتحت کرنے ، مدارس کی رجسٹریشن،مدارس کے بینک اکاؤنٹس، مدارس میں غیر ملکی طلبہ کے ویزے اور داخلہ کے پروفارمہ سمیت دیگر معاملات کو حل کرنے سمیت دیگر تمام معاملات پر حکومت سے تاحال مذاکرات جاری ہیں، انہوں نے کہا کہ مدارس میں مختلف اداروں کی جانب سے پریشر کسی صورت برداشت نہیں کیا جائے گا ، انہوں نے کہا کہ مدارس کا ملک و ملت کی تعمیر و ترقی میں کلیدی کردار کسی سے ڈھکی چھپی بات نہیں ،حکومت سے مدارس کے حوالے سے تمام معاملات وفاق المدارس کی سطح پر طے کئے جائیں گے، انہوں نے 1942سے ثانی دارالعلوم دیوبند ام المدارس جامعہ مطلع العلوم بلوچستان اور حضرت مولانا عرض محمد ؒ کی علمی ،دینی ،سیاسی، روحانی، ختم نبوت، تبلیغی و سماجی خدمات کو خراج تحسین پیش کیا اور حافظ حسین احمد کی صحتیابی، جامعہ مطلع العلوم کی کامیابی و ترقی کے لیے خصوصی دعا کی۔

وفاق المدارس عربیہ

مزید :

صفحہ آخر -