میں کھڑاہوں ، ظلم کانظام ختم ہوکررہے گا، سعدریق، قبل ازگرفتاری ضمانت میں 11دسمبر تک توسیع

میں کھڑاہوں ، ظلم کانظام ختم ہوکررہے گا، سعدریق، قبل ازگرفتاری ضمانت میں ...

  

لاہور(نامہ نگارخصوصی)لاہور ہائی کورٹ کے مسٹر جسٹس طارق عباسی اور مرزا وقاص رؤف پر مشتمل ڈویژن بنچ نے مسلم لیگ (ن) کے راہنما خواجہ سعد رفیق اور خواجہ سلمان رفیق کی ضمانت قبل ازگرفتاری میں 11 دسمبر تک توسیع کرتے ہوئے نیب کو وارنٹ گرفتاری جاری کرنے کی وجوہات تحریری طور پرجمع کروانے کا حکم دے دیا،ضمانت میں توسیع کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے خواجہ سعد رفیق نے کہا کہ عمران خان کی اپنی انکوائری چل رہی ہے اوروہ وزیراعظم بنے بیٹھے ہیں۔کس کے کہنے پر ہمارا گھیرا تنگ کیا جارہاہے،فاضل بنچ کے روبرو خواجہ سعد رفیق اور خواجہ سلمان رفیق عدالت میں پیش ہوئے تاہم ان کے وکلا سپریم کورٹ میں مصروفیت کے باعث پیش نہ سکے،عدالت نے نیب پراسیکیوٹر سے استفسار کیا کہ ابھی تک خواجہ سعد رفیق کی تفتیش تبدیلی کی درخواست پر فیصلہ کیوں نہیں کیاگیا؟جس پر نیب کے وکیل نے بتایا کہ تفتیش تبدیلی کی درخواست پر جلد فیصلہ کر دیا جائے گا، ہائی کورٹ کا تحریری فیصلہ تاخیر سے ملا جو اب چیئرمین نیب کو بھجوا دیا گیا ہے، چیئرمین نیب نے فریقین کو سن لیا ہے ،اسی ہفتے فیصلہ کر دیا جائے گا،عدالت نے کہا اگر چیئرمین آج فیصلہ کر دیتے ہیں تو کیس کو کل کیلئے رکھ دیتے ہیں،جس پر نیب ہراسیکیوٹر نے پیر تک مہلت مانگ لی، عدالت نے خواجہ برادران کی عبوری ضمانتیں 11 دسمبر تک ملتوی کرتے ہوئے نیب کو وارنٹ گرفتاری جاری کرنے کی وجوہات تحریری طور پر پیش کرنے کا حکم دیدیا۔سماعت کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے خواجہ سعدرفیق نے کہا کہ میں کھڑا رہوں گااورظلم کا نظام ختم ہو کر رہے گا،شہباز شریف کاقصور یہ ہے کہ انہوں نے پنجاب کا نقشہ بدلا، انہوں نے کہا کہ مسلم لیگ (ن)کے وہ ورکر نشانہ بنے جو بات کرتے ہیں۔نیب لاہور کے پاس میرے اورسلمان کیخلاف ایک سال سے ابھی تک کوئی ایک ثبوت نہیں،5 لوگ گوا ہ ہیں جو کہتے ہیں یہ نہیں ہو سکتا،قیصر امین بیمار ہیں ان کو بھی غلط پکڑا،انہیں ڈرگز کے زیر اثر رکھا گیاہے۔ ا ن کا میڈیکل ٹیسٹ کروائیں، قیصر امین بٹ نے جو بیان دیا وہ وعدہ معاف گواہ کا بیان نہیں ہے ، نیب نے جھوٹ بولا،ہمیں چیئرمین نیب نے بلایا تھا ہم نے اپنے خلاف تفتیش تبدیل کرنے کا کہا،ہم کہتے ہیں کس چیز کی گرفتاری کرنی ہے، کیا کوئی ریکوری کرنی ہے؟ ان کے پاس کوئی ثبوت نہیں ہے۔ہماری انوسٹی گیشن کسی اور اچھے افسر سے کروائی جائے،لوگوں کے ساتھ مل کر ہمارے خلاف جھوٹے گواہ بنا ئے جارہے ہیں،ہم جب جب عدالت نے بلایا پیش ہوئے ہیں،نام نہاد دس باراں ٹرینیں چلا کر لوگوں کو گمراہ کیا جا رہاہے ،ریلوے کے کرایوں کو بڑھانا بلا جواز ہے اور عوام کو تنگ کرنے کے ہتھکنڈے ہیں۔

سعد رفیق

مزید :

علاقائی -